Urdu News and Media Website

چینی ماہرین نے سی پیک سے متعلق امریکی اخبار کی رپورٹ مسترد کردی

بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک)چینی ماہرین نے امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ میں چین کے شمال مغربی خودمختار ریجن سنکیانگ یغور کے بارے میں شائع ہونے والی ایک حالیہ رپورٹ مسترد کر دی۔جس میں چینی خودمختار علاقے کے بارے میں بے بنیاد الزامات عائد کئے گئے تھے،چینی حکام کا کہنا ہے کہ وہ تعمیری تنقید کا ہمیشہ خیر مقدم کرتے ہیں لیکن اس کی بھی کوئی حد ہونی چاہیے،تاہم چین پاکستان اقتصادی راہداری جسے سی پیک کے نام سے یاد کیا جاتا ہے،اس سے قطع نظر کہ سی پیک کے منصوبے پاکستان کیلئے بے شمار فوائد کے حامل ہیں،چین اور پاکستان کے درمیان 60ارب ڈالر کے پروگرام کے بارے میں تصورات کی کمی نہیں ہے،سی پیک کے تحت بنیادی ڈھانچے اور توانائی کے منصوبے سنگ میل کی حیثیت رکھتے ہیں بعض غیر ملکی حکام ماہرین اور صحافی مسلسل پاکستان اقتصادی معاملات کے ساتھ اسے وابستہ کر رہے ہیں،جیساکہ پاکستان کے ذرمبادلہ کے ذخائر کا مسئلہ ہے،اس سے آگے بڑھ کر وہ یہ بھی کہنے لگے ہیں کہ اربوں روپوں کی سرمایہ کاری کے ذریعے چین اس ملک کو کنٹرول کر لے گا،چینی اخبار گلوبل ٹائمز کے مطابق ان لوگوں کو شاید سی پیک منصوبوں اور اس کے مالیاتی ڈھانچے کا علم نہیں ہے لیکن حیقیقت یہ ہے کہ بعض حکام،چوٹی کے ماہرین اور پاکستان میں کاروباری رہنماء اس بات پر یقین رکھتے ہیں کہ اس منصوبے پر ہر صورت میں عمل درآمد ہو جائیگا،بعض افراد پاکستان میں امن و آمان کی صورتحال کے بارے میں بھی غلط اطلاعات پھیلاتے ہیں اور وہ اندرونی سیاسی صورتحال کا بھی ذکر کرتے ہیں وہ سمجھتے ہیں کہ اس تصور کے ذریعے زیادہ چینی کمپنیوں اور تنظیموں کے پاکستان آنے کی حوصلہ شکنی کر رہے ہیں اور اس سے سی پیک کی ترقی کی رفتار سست کی جا سکتی ہے،اسلام آباد سے کراچی کے ایک حالیہ دورہ کے دوران اعلیٰ حکام،ماہرین،کاروباری افراد اور عام پاکستانیوں نے برملا اس رائے کا اظہار کیا کہ سی پیک سے ملنے والے بے شمار فوائد اور چین پاکستان وسیع تر تعاون کے باوجود چین نے شاید ہی اس منصوبے کے نتائج کے بارے میں بات کی ہو اور عالمی منفی بیانیے اور چینیوں کے پاکستان آنے کے بارے میں ہچکچاہٹ کا ذکر کیا ہو۔کراچی میں ایک کاروباری رہنماء نے کہا یہ ہو سکتا ہے کہ وہ شرمارہے ہوں۔انہوں نے مزید کہا کہ سی پیک کے بارے میں بنیادی خیال اور چین پاکستان وسیع تعلقات جس کے تحت پاکستان کے بنیادی ڈھانچے اور توانائی کے منصوبے میں سرمایہ کاری کی جا رہی ہے کافی نہیں ہے اور یہ کہ چین کو پاکستان کے تمام شعبوں صنعتی سے سماجی ترقی تک میں آگے بڑھ کر کام کرنا چاہیے۔

تبصرے