Urdu News and Media Website

کرفیو اور لاک ڈاؤن کی آڑ میں عائد بھارتی پابندیوں نے کشمیری عوام کی زندگیاں اجیرن بنا ڈالیں:راجہ طارق محمود

بھارت مقبوضہ جموں وکشمیر میں انسانی حقوق کی شدید پامالیوں میں ملوث ہے۔ کرفیو اور لاک ڈاؤن کی آڑ میں کشمیری عوام پرپابندیاں عائد کرکے تمام معاشی،
سماجی اور مذہبی معاملات پر روک ٹوک لگادی گئی ہے جس نے کشمیری عوام کی زندگیوں کو اجیرن بناڈالاہے۔

اقوام متحدہ سمیت انسانی حقوق کے عالمی اداروں کو چاہیے کہ وہ بھارت کے ان انسانیت کُش اقدامات کا نوٹس لیں۔ ان خیالات کا اظہار
سیکرٹری جموں وکشمیرلبریشن سیل راجہ طارق محمود نے ہیومن رائٹس سوسائٹی آف پاکستان کے صدر سید عاصم ظفر سے ان کے دفتر میں ملاقات
کے دوران کیا۔ اس موقع پر سینئرنائب صدر وسابق وفاقی وزیر بیگم مہناز رفیع، سیکرٹری جنرل اے ایم شکوری، انچارج ریسرچ ونگ وکشمیرسنٹر لاہور
سردارساجد محمود اوربیرسٹر افضل جاویدبھی موجود تھے۔ راجہ طارق محمود اور سید عاصم ظفرنے کہا کہ ایک جانب جدید ترین اسلحہ سے لیس
بھارتی فوج آئے دن کشمیری نوجوانوں کو اغوا کرکے انھیں عقوبت خانوں میں تشدد کرکے شہید کررہی ہے اور دوسری جانب عام شہریوں پر
کڑی پابندیاں عائد کرتے ہوئے انھیں آزادی کی تحریک چلانے کی سزا دی جارہی ہے۔ انھوں نے مزید کہا کہ بھارت دنیا کی سب سے
بڑی جمہوریت کا علم بردار ہے لیکن وہ کشمیری عوام کو ان کا پیدائشی حق حق خودارادیت دینے پر تیار نہیں جس کا وعدہ پون صدی قبل اس نے
اقوام متحدہ کے پلیٹ فارم پر عالمی برادری کے ساتھ کیا تھا۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان میں موجود انسانی حقوق کے اداروں اور تنظیموں کو
کشمیری عوام پر بھارتی مظالم بھرپورانداز میں اجاگرکرنے اور عالمی برادری کو ان سے آگاہ کرنے کے لیے مربوط اور منظم انداز میں کام
کرنے کی ضرورت ہے۔

یہ بھی پڑھیں:

مقبوضہ جموں و کشمیر؛ بھارت کی ریاستی دہشت گردی جاری!

سید عاصم ظفر اور بیگم مہناز رفیع نے کہا کہ ہیومن رائٹس سوسائٹی آف پاکستان کے پلیٹ فارم سے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کے خلاف
بھرپور انداز میں آواز بلند کی جارہی ہے۔ کشمیری عوام ہمارے بھائی ہیں اور ان کی بلامشروط آزادی کے لیے جدوجہد کی ہر سطح پر
تائید و حمایت جاری رکھی جائے گی۔ کشمیری عوام اس وقت بدترین حالات اور مظالم کا شکار ہیں لیکن ہمیں یقین ہے کہ ان کی قربانیاں رائیگاں
نہیں جائیں گی۔ بین الاقوامی دباؤ اور معاشی مسائل اپنی جگہ مگر حکومت پاکستان کو کشمیر کے حوالہ سے اپنے دیرینہ موقف پر قائم رہتے ہوئے
مسئلہ کشمیر کی ہیٗت کو ہر صورت برقرار رکھنا ہوگا بصورت دیگر ملکی و قومی سطح پر نئے محاذ کھلنے کا خدشہ موجود ہے۔
لاہور(نیوز نامہ)

تبصرے