Urdu News and Media Website

سلطنت عمان میں پاکستانی سفیر کی اعزازی سرپرستی میں رمضان المبارک میں ضرورت مند پاکستانیوں میں اشیائے خورونوش تقسیم کی گئیں

رپورٹ: سید زیب حسن جعفری۔۔۔۔ اللّٰہ تعالیٰ کا لاکھ لاکھ شکر ہے کہ اس کے فضل و کرم کی بدولت اس سال بھی رمضان المبارک میں مجھ راقم الحروف سمیت جذبہ خیر سے سرشار پاکستانی نوجوانوں پر مشتمل ہماری ٹیم سلطنت عمان کے دارالحکومت مسقط اور اس کے کچھ دیگر شہروں میں قیام پذیر اپنی کمیونٹی کے ضرورت مند افراد اور ان کے اہل و عیال کے شانہ بشانہ کھڑی رہی اور اس ماہ مبارک کے آغاز سے آخر تک ان سب کو ضروری غذائی اشیاء کی بروقت فراہمی کا سلسلہ جاری رکھا ۔ اس ضمن میں سب سے پہلے مذکورہ غذائی سامان کی دستیابی کو جلد از جلد یقینی بنانا سب سے اہم مرحلہ تھا ۔ چنانچہ بفضل خدا اور سلطنت عمان میں ہمارے فرض شناس ، متحرک ، عوام دوست اور ہردلعزیز سفیر پاکستان احسن وگن کی اعزازی سرپرستی اور دانشمندانہ مشاورت سے ہم نے یہ مرحلہ ابتدائی تین چار روز ہی میں طے کرلیا۔ پھر ان اشیاء کی پیکنگ کے بعد ان کی ضرورت مند ہموطنوں کے گھروں تک ترسیل کا کام شروع ہو گیا جو کہ رمضان المبارک کے آخری ایام تک بحسن و خوبی جاری رہا ۔ قبل ازیں مجھ ناچیز نے ایک متعلقہ حکومتی عہدیدار سے فون پر بات کر کے لاک ڈاؤن کے دوران میں متذکرہ بالا راشن کی تقسیم کی اجازت کے حصول کے سلسلے میں دریافت کیا تو انہوں نے ازراہ کرم کووڈ -19 کو کنٹرول کرنے والی عمانی سپریم کمیٹی کے واضح احکامات کی بابت مجھے آگاہ کیا اور ان پر مکمل عملدرآمد کی بھرپور تلقین بھی کی۔ ہماری پوری ٹیم کے لئے یہ خوشگوار امر سرمایہ افتخار ہے کہ ہم نے ان حکومتی احکامات کی مکمل پیروی کی۔ چنانچہ اپنے ذاتی معمولات ترک کرکے رضاکارانہ طور پر بخوشی دن رات یہ بے لوث اور کٹھن کار خیر انجام دینے والے ہم سب رفقاء نے حکومتی حفاظتی اقدامات کی روشنی میں یہ فیصلہ کیا کہ اس قومی فرض کی تکمیل لاک ڈاؤن کے اوقات سے پہلے ہی یقینی بنائی جائے ۔ چنانچہ ہماری پوری ٹیم نے صبح سے شام تک مسقط اور بڑے داخلی عمانی شہروں صحار ، بریمی اور صور میں بلا تاخیر یہ خدمت جاری رکھی ۔ اتفاقاً جس روز ہم نے مذکورہ غذائی سامان ترسیل کے لئے ترتیب دے دیا ۔ اسی روز میں کورونا کا شکار ہو کر ہسپتال میں داخل ہو گیا ۔ اس بناء پر میں شروع کے چند ایام اپنے ساتھیوں کے ہمراہ اس نیک کام میں عملاً شرکت سے محروم رہا ۔ البتہ موبائل فون پر میں ان سے مسلسل رابطے میں رہا ۔ اس دوران میں ابراہیم پورانام ۔۔۔۔ اور شاندار بخاری نے پوری ٹیم کی احسن طریقے سے رہنمائی کی اور پھر رب کریم کی رحمت اور احباب کی دعاؤں سے روبصحت ہونے کے بعد میں بھی اپنے فرض کی ہر ممکن ادائیگی کی کوشش میں مصروف ہو گیا ۔ماشاءاللّٰہ ہمارے محبوب و مقبول سفیر پاکستان احسن وگن کی گراں قدر اعزازی سرپرستی میں اور ہماری کچھ اہل ثروت مخیر شخصیات کے پرخلوص فراخدلانہ تعاون کے باعث تقریبا ایک مہینے کے بعد ہماری یہ مشترکہ فلاحی کاوش اپنے اختتام کو پہنچ چکی ہے اور اس کی ایک رپورٹ تیار کر کے ہماری ٹیم کی جانب سے سفیر پاکستان تک پہنچا دی گئی ہے ۔ جس پر ان کی جانب سے ہماری پوری ٹیم کی عمدگی سے حوصلہ افزائی کی گئی ہے ۔ سفیر پاکستان کی جانب سے اس پذیرائی پر مجھ سمیت اس ٹیم کے اراکین ابراہیم احمد، شاندار بخاری ، قمر ریاض، عتیق شیخ، محمد شاہ شیرانی ، امیرحمزہ ،عمار ،محمد عباس ، وحید ، حسنین اور حاجی عبدالغفار الزدجالی ان کے شکر گزار ہیں اور انہیں خراج تحسین پیش کرتے ہیں کہ اللّٰہ تعالیٰ نے ان کی بہترین راہنمائی کے نتیجے میں ہمیں اس نیک مقصد میں سرخروئی عطا فرمائی ۔ علاوہ ازیں میں اس بابرکت کام کے سب تعاون کنندگان اور اپنے تمام ساتھیوں کا دلی طور پر شکریہ ادا کرتا ہوں اور دعا گو ہوں کہ رب العزت ہماری یہ باہمی خدمت قبول فرمائے اور اسے دین ودنیا میں ہماری بھلائی کا موجب بنائے ۔ آمین ۔

تبصرے