Urdu News and Media Website

شہباز گل نے کمپنی پر جھوٹے الزامات عائد کیے: ترجمان پلیٹ فارم ٹورازم

لاہور(ویب ڈیسک) عدالت میں اپنی پیشی کو اپنے سیاسی مفادات کے لئے استعمال کرتے ہوئے شہباز گل نے ایک مرتبہ پھر پاکستان کے سفارتی اور تجارتی مفادات کو بالائے طاق رکھ دیا۔ ترجمان پلیٹ فارم ٹورازم کا کہنا ہے کہ شہباز گل نے ہماری کمپنی کے خلاف غیر اخلاقی زبان کا استعمال کیا اور جھوٹے الزامات عائد کئے اور ثابت کیا کہ وہ کس طرح زمینی حقائق سے ناواقف ہیں۔
انہوں نے سچ اور حقائق کو پیش نظر رکھے بغیر ہماری کمپنی کو سیاسی لڑائی میں دھکیلنے کی کوشش کی اور دوبارہ ایسے من گھڑت دعوے کئے جن کی وجہ سے وہ ہماری کمپنی کی جانب سے دائر کئے گئے کیس کا سامنا کر رہے ہیں۔
انہوں نے پچھلی کئی دفعہ کی طرح اس مرتبہ بھی اس بات کی طرف اشارہ کیا کہ میٹرو بس کا کنٹریکٹ غیر منصفانہ اور غیر قانونی تھا اور پچھلی حکومت اور میٹرو بس آپریٹر نے آپس میں گٹھ جوڑ کیا تا کہ پچھلی انتظامیہ کو غیر قانونی ادائیگیاں کی جا سکیں
شہباز گل کا یہ دعوی کہ ہم مجاز اتھارٹی کے علاوہ کسی سے بھی غیر قانونی رابطے میں تھے، سراسر جھوٹ، قابل مذمت اور من گھڑت ہے۔
ہم ان کے اس بے بنیاد بیانئے کی شدید مذمت کرتے ہیں۔ ان کے دعووں کے برعکس، کمپنی اور اس کے افسران ان کی جانب سے دائر کئے گئے جھوٹے مقدمات کا سامنا کر رہے ہیں۔
ہم اس بات کا اعادہ کرنا چاہیں گے کہ شہباز گل حقائق کے برعکس بات کر رہے ہیں اور حقائق کو بدل کر پیش کر رہے ہیں۔
حکومت میں وفاقی وزیر کے درجے پر ہونے کے باوجود شہباز گل نے کئی مرتبہ عائد کئے گئے الزامات کے بارے میں کوئی ٹھوس ثبوت پیش نہیں کیا۔
ان کے کئی بار دہرائے گئے دعوؤں کے برعکس میٹرو بس کے تمام تر کاروباری معاملات پاکستانی کرنسی یعنی روپے میں ہوتے رہے ہیں اور کوئی بھی رقم کی لین دین ڈالر میں نہیں کی گئی۔
یہاں پر یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ بیرونی سرمایہ کاروں کی پیش کی گئی قیمتوں کا تعلق معاشی، سیاسی اور زمینی حقائق کو مد نظر رکھ کر ہوتا ہے۔
اسٹینڈرڈ اور پوور کی کریڈٹ ریٹنگ 13 جولائی 2012 میں پاکستان کے لئے Caa2 تھی جس کی آوٹ لک منفی تھی جس کا مطلب یہ ہے کہ کاروباری ساکھ کمزور تھی جبکہ کریڈٹ محفوظ نہیں تھا۔ لیکن وقت کے ساتھ اس میں مثبت تبدیلی آئی ہے اور پاکستان کی کرنٹ ریٹنگ B3 ہے اور اس کی ساکھ 8اگست 2020 کے اسٹینڈرڈ اور پوور کے مطابق مستحکم ہے۔
معاشی، سیاسی اور زمینی حقائق اس بات کا تعین کرتے ہیں کہ سرمایہ دار سرمایہ کاری کرنے میں کتنی دلچسپی رکھتا ہے اور انہی باتوں سے قیمتوں کا تعین بھی ہوتا ہے۔
مزید براں 2012 میں ہمارے آپریشنز کے آغاز میں پاکستان میں پہلے کبھی نہ استعمال کی گئی لمبی بسوں کو متعارف کروایا گیا۔
تاہم 2020 میں 5 مہینے کی توسیع کے لئے ہمیں کوئی نئی سرمایہ کاری کی ضرورت نہیں تھی۔
ہم نے انہی میٹرو بسوں کو آپریٹ کرنا تھا جو کہ پہلے سے ہی میٹرو ٹریک پر رواں دواں ہیں۔
اسی بات کو پیش نظر رکھتے ہوئے ہم نے اپنی قیمتیں بھی کم کر دیں۔
قابل ذکر بات یہ ہے کہ اپنے ہی جھوٹے اور حقائق کے برعکس دئیے گئے بیانات کا دفاع شہباز گل کے لئے بھی ایک ناممکن کام ثابت ہوا ہے۔
ان کی بوکھلاہٹ اور ان کی غیر اخلاقی زبان کا استعمال اس بات کی غمازی کرتا یے۔
مزید براں یہ قومی سطح پر کسی بھی سیاستدان کے لئے غیر مناسب ہے۔

تبصرے