Urdu News and Media Website

لاہور ہائیکورٹ کے حکم کے باوجود ترک کمپنیوں کو ورکشاپس کا قبضہ واپس نہیں کیا گیا

لاہور(نیوزنامہ)لاہور ہائیکورٹ کے تحریری حکم نامے کے باوجود ترک کمپنیوں البیراک اور اوزپاک کو ورکشاپس کا قبضہ واپس نہیں کیا گیا
فیروز پور روڈ اور سگیاں پل پر واقع ورکشاپس پر البیراک اور اوزپاک ملازمین کی بڑی تعداد قبضہ واپس لینے پہنچ گئے مگر ایل ڈبلیو ایم سی نے کورٹ کے احکامات ہوا میں اڑا دئیے
جمعرات کے روز لاہور ہائیکورٹ سے تحریری حکم نامہ جاری ہونے کے بعد ترک کمپنیاں البیراک اور اوزپاک ایل ڈبلیو ایم سی سے اپنی مشینری اور دیگر املاک واپس لینے کی غرض سے ورکشاپس پر پہنچ گئیں۔
البیراک پراجیکٹ ڈائریکٹر چارے اوزل، سی ای او اوزپاک نظام التین، پراجیکٹ ڈائریکٹر اوزپاک افضال شاہ سمیت کمپنیوں کے دیگر ملازمین فیروز پور روڈ اور سگیاں پل پر واقع ورکشاپس پر کورٹ آرڈر کے ساتھ پہنچ گئے۔
پراجیکٹ ڈائریکٹر البیراک چارے اوزل کا کہنا تھا کہ ایل ڈبلیو ایم سی کی جانب سے کورٹ آرڈرز موصول نہ کرنے کی خاطر مختلف حربے استعمال کئے جا رہے ہیں۔
ایل ڈبلیو ایم سی اعلی انتظامیہ نے بدھ کے روزشاہین کمپلیکس میں واقع مرکزی دفاتر بند کر دئیے
جبکہ آج ان کے افسران نے اپنے موبائل فونزاور خصوصاواٹس ایپ بھی بند کر دئیے ہیں تا کہ کورٹ آرڈز نہ بھیجے جا سکیں۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ ایل ڈبلیو ایم سی نے گزشتہ روز ترک کمپنیوں کو مذاکرات کے ذریعے معاملات حل کرنے کی دعوت دی جس کیلئے کمپنی نے دونوں کنٹریکٹرز کو خطوط ارسال کئے۔
ایل ڈبلیو ایم سی نے اپنے خط میں صرف فیلڈ گاڑیوں کے مسئلے کو حل کرنے کا ذکر کیا ہے
جبکہ ترک کمپنیوں کوگزشتہ اڑھائی سالوں سے درپیش مسائل پر کوئی توجہ مرکوز نہیں کی گئی۔
ان کا کہنا تھا کہ کورٹ کے آرڈر نظر انداز کرنے کا مطلب یہ ہے کہ ایل ڈبلیو ایم سی خود کو قانون سے مبرا سمجھتی ہے۔
سی ای او اوزپاک نظام التین کا کہنا تھا کہ جب سے ایل ڈبلیو ایم سی نے کنٹریکٹرز کی گاڑیوں اور ورکشاپس کا چارج سنبھالا ہے، لاہور میں صفائی کی صورتحال ہر گزرتے دن کے ساتھ بگڑ رہی ہے۔
پراجیکٹ ڈائریکٹرز البیراک اور اوزپاک نے ایل ڈبلیو ایم سی سے ہائی کورٹ کے احکامات کی روشنی میں ترک کمپنیوں کی مشینری، ورکشاپس اور دیگر املاک فوری واپس کرنے کا مطالبہ کیا۔
مزید براں،ایل ڈبلیو ایم سی کی جانب سے کورٹ کے احکامات نہ ماننے پر البیراک دو مختلف تھانوں میں ایف آئی آر درج کروا رہی ہے۔

تبصرے