Urdu News and Media Website

محافظ ہی عزت کے لٹیرے بن گئے

عزت کے محافظ ہی عزت کے لٹیرے بن گئے، اوباش نوجوانوں کی شکایت کرنے کرنے والی لڑکی پولیس اہلکار کے ہاتھو ں ہی زیادتی کا شکار۔

زیادتی کے دل دہلا دینے والے واقعات میں اضافہ ہونے لگا اور اب محافظ ہی عزت کے لٹیرے بن گئے، گوجرانوالہ میں اوباش نوجوانوں کی شکایت کرنے والی لڑکی کو پولیس اہلکار ہی نے مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بناڈالا۔

تفصیلات کے مطابق مبینہ جنسی زیادتی کا واقعہ گوجرانوالہ کی عزیزکالونی
میں پیش آیا جہاں لڑکی نے تھانے میں علاقےکے اوباش نوجوانوں کی
شکایت کی تھی اور انکوائری کے لیے گھر آنے والے اسسٹنٹ سب انسپکٹر (اے ایس آئی)
نے لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔

لڑکی نے ویڈیو بیان میں کہا ہے کہ اے ایس آئی مبشر نے زیادتی کی اور
شکایت کرنے کی صورت میں سنگین نتائج کی دھمکی بھی دی جب کہ وہ
شکایت لے کر ایس ایچ اوکے پاس گئے لیکن کوئی بات نہیں سنی گئی۔

یہ بھی پڑھیں: مہوش حیات بچوں سے زیادتی کے مجرموں کو سرعام پھانسی کی مخالفت کرنے والوں پر برس پڑیں

دوسری جانب آئی جی پنجاب پولیس انعام غنی نے گوجرانوالہ میں خاتون سے
اے ایس آئی کی مبینہ زیادتی کا نوٹس لیتے ہوئے آر پی او گوجرانوالہ سے
واقعے کی رپورٹ طلب کرلی ہے اور ذمہ داران کے خلاف فوری محکمانہ و قانونی
کارروائی کی ہدایت کی ہے۔

پولیس حکام کے مطابق متاثرہ لڑکی کامیڈیکل کرالیا گیا ہے،
رپورٹ ابھی موصول نہیں ہوئی، واقعے کی تحقیقات کے لیے
ایس پی انوسٹی گیشن کی سربراہی میں 4 رکنی ٹیم تشکیل دے دی گئی ہے۔
مقدمے میں ملوث اے ایس آئی نےگرفتاری سے بچنے
کےلیے عبوری ضمانت کرالی ہے۔

اے ایس آئی کا مؤقف ہے کہ مجھ پرجھوٹاالزام لگایاگیا،
تفتیش میں حقائق سامنے آجائیں گے۔
گوجرانوالہ(ویب ڈیسک)

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.