Urdu News and Media Website

بھارت پر نسل پرستی قبضہ، سرکاری سکول میں کالی رنگت بدصورتی قرار

بھارت نسل پرستی میں تمام حدیں پار کرگیا،بھارت کے سرکاری سکول میں کالی رنگت کو بدصورتی قرار دے دیا گیا۔

بھارتی ریاست ویسٹ بنگال میں واقع ضلع بردوان کے پرائمری محکمہ تعلیم کے سرکاری سکول، میونسپل گرلز ہائی سکول میں نسل پرستی پر مبنی تعصبانہ مواد پڑھائے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔

بھارتی ریاست ویسٹ بنگال کے ایک سکول کی کتاب میں انگریزی لفظ ’ یو ‘ کے آگے کالی رنگت والے فرد کی تصویر بنائی گئی ہے اور ’ یو فار اَگلی ‘ کا سبق پڑھاتے ہوئے کالی رنگت والے افراد کو بد صورت قرار دے دیا گیا ہے ۔

بھارتی ویب سائٹ ’ انڈیا ٹو ڈے ‘ کے مطابق سرکاری پرائمری سکول کی انگریزی کی کتاب میں لفظ ’ یو ‘ (U) پڑھانے کے لیے ’ یو فار اَگلی ‘ (U for ugly) لکھا گیا ہے اور بچوں کو سمجھانے کے لیے ساتھ میں ایک کالی رنگت والے انسان کا خاکہ استعمال کیا گیا ہے ۔
سکول کی کتاب میں بچوں کو رنگت سے متعلق تعصبانہ مواد
پڑھائے جانے کے خلاف والدین کی جانب سے احتجاج کیا گیا ہے۔

سکول کی کتاب میں اس تعصبانہ مواد پر بچوں کے والدین کی
جانب سے احتجاج کرتے ہوئے کارروائی کا مطالبہ کیا گیا ہے ۔
ایک طالب علم کے والد نے میڈیا سے گفتگو کے دوران بتایا کہ
’اُن کی بیٹی میونسپل کے پرائمری سرکاری سکول میں پڑھ رہی ہے،

وہ بیٹی کو پڑھا رہے تھے جب یہ تعصبانہ مواد اُن کی نظروں سے گزرا،
اُن کا کہنا تھا کہ بچوں کو تعلیمی اداروں میں کالی رنگت کو
بدصورتی قرار دیتے ہوئے اس کی
تعلیم دینا بہت غلط طریقہ ہے۔‘

یہ بھی پڑھیں: بھارت کرونا سے بھی زیادہ خطرناک وائرس کی لپیٹ میں آگیا

خیال رہے کہ یہ نسل پرستی کا واقعہ اس وقت سامنے آیا ہے
جب امریکا سمیت پوری دنیا میں نسل پرستی کے خلاف
مظاہرے جاری ہیں۔
مغربی بنگال(ویب ڈیسک)

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.