Urdu News and Media Website

سماجی دوری اختیار کریں، ورنہ منفرد سزا ملے گی

کرونا وائرس کے باعث کیے گئے لاک ڈاؤن پر سختی سے عمل کرانے کیلئے حکومت نے سخت اور منفرد سزا ؤں کا فیصلہ کر لیا۔

کرونا وائرس کا پھیلاؤ ہے کہ روکنے کا نام ہی نہیں لے رہا،دنیا بھر میں کیسز کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے،ایسےمیں بہت سے ممالک لاک ڈاؤن پر عمل کرانے کیلئے لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی پر سزاؤں میں بھی تبدیلیاں کر رہے ہیں سزا ؤں کو مزید سخت کر رہے ہیں۔

ایسے میں انڈونیشیا میں کرونا وائرس کے سبب کیے جانے والے
حفاظتی اقدامات کی خلاف ورزی کرنے والوں کو
سخت سزائیں دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔
انڈونیشیا کے دارالحکومت جکارتہ میں انتظامیہ نے
کرونا کے حوالے سے احتیاطی تدابیر کی خلاف ورزی
کرنے والوں کے لیے کئی سخت سزاؤں کے ساتھ
جرمانے کا اعلان کیا ہے۔

 یہ بھی پڑھیں: کیا کرونا وائرس نوٹوں کے ذریعے بھی منتقل ہو سکتا ہے؟

جن سزاؤں کا اعلان کیا گیا ہے ان میں سب سے
منفرد سزا سماجی فاصلہ نہ رکھنے والوں کے لیے ہے ،
انہیں سزا کے طور پر بیت الخلاء کی صفائی کرنا ہوگی
جب کہ دیگر خلاف ورزیوں پر بھاری جرمانہ عائد ہوگا۔

ماسک نہ پہننے والوں کو 2 لاکھ 50 ہزار انڈونیشین روپے
کا جرمانہ بھرنا پڑے گاجب کہ مجمع لگانے والے افراد کو
عوامی مقامات کی صفائی کرنی پڑے گی۔

یہ بھی پڑھیں: کرونا وائرس آنکھوں کے ذریعے بھی منتقل ہوسکتا ہے

قانون توڑنے والوں کو مخصوص جیکٹ بھی پہنائی
جائے گی اور جو کمپنیاں لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی
کریں گی ان پر 5 کروڑ تک کا جرمانہ کیا جاسکے گا۔

واضح رہے کہ انڈونیشیا میں کرونا وائرس سے متاثرہ افراد
کی تعداد 14 ہزار سے تجاوز کرچکی ہے جب کہ
ایک ہزار سے زائد افرادجاں بحق ہوچکے ہیں۔
جکارتہ(ویب ڈیسک)

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.