Urdu News and Media Website

مرغی اور بطخ کے آباؤ اجداد کاسراغ مل گیا

مرغی اور بطخ کے آباؤ اجداد کاسراغ مل گیا۔لاکھوں سال پہلے زمین پرپائے جانے والے پرندے کی باقیات دریافت۔

67ملین سال پہلے زمین پرپائے جانے والے قدیم پرند ے کی  باقیات بیلجیئم میں  ملی ہیں۔

باقیات کےتجزیئے کے بعد پتہ چلا ہے کہ یہ پرندہ موجودہ دور کے بہت سے پرندوں

جن میں مرغی،بطخ اور بٹیرشامل ہیں کے آباؤ اجداد کا حصہ ہے۔

یہ بھی پڑھیں:4ہزار700سال قدیم مصر کے پہلے اہرام کے اہم رازوں سے پردہ اٹھ گیا

یہ قدیم ترین پرندہ ڈائنوسارکےدور سے تعلق رکھتا ہے۔

لاکھوں سال پہلے زمین پرپایا جانا والا یہ پرندہ  موجودہ دور کی مرغی اور بطح سے ملتا جلتاہے۔

قدیم دور کایہ پرندہ سمندر کے قریب پایا جاتا تھا۔

67ملین سال پہلےزمین پرپائے جانے والے اس پرندے کی باقیات میں سے کھوپڑی سب سے زیادہ محفوظ حالت میں ملی ہے۔

بیلجیئم اور نیدرلینڈ کی سرحد پر قلعہ ایبون کے قریب رومنٹبوس کان میں  ونڈر چکن کی باقیات دریافت ہوئیں ۔

یہ بھیی پڑھیں:46ہزار سال قدیم پرندہ دریافت۔سائنسدان حیران رہ گئے

قدیم باقیات میں ایک مکمل کھوپڑی کے ساتھ ساتھ ٹانگوں کے ٹکڑے بھی شامل ہیں ۔

ونڈرچیکن کو دیئے گئے سائنسی نام کا نامAsteriornis ہے۔جس کا مطلب ہے گرتے ہوئے ستاروں کی قدیم یونانی دیوی آسٹیریا

 جس نے افسانوی طور پر خود کو بٹیر میں تبدیل کردیا۔

یہ بھی پڑھیں:بھگوان کے5ارب45کروڑ روپے پھنس گئے

سائنسدان اتنی پرانی باقیات اتنی اچھی حالت میں دیکھ کر حیران رہ گئے۔سائنسدانوں نے پرندے کو ونڈر چکن کانام دیا ہے۔

ونڈرچکن آج کی مرغیوں اور بطخوں کا آباؤ اجداد سمجھا جاتا ہے۔

یونیورسٹی آف کیمبرج کےسائنسدان ڈینیئل فیلڈ کاکہناہے کہ قدیم پرندے کی باقیات کوجس لمحے میں پہلی بار دیکھا

وہ میرے سائنسی کیریئر کا سب سے پُرجوش لمحہ تھا۔

یہ بھی پڑھیں:قدیم دورکےانسان گوشت خور تھےیا ویجیٹیرین؟معمہ حل ہوگیا

ان کہنا ہے کہ مجھے یقین ہی نہیں آرہاتھا،اتنی بڑی دریافت کا یقین کرنے کےلیے خود کوچٹکی لینا پڑی۔

سائنسدانوں کا کہناہے کہ اتنے قدیم پرندے کی باقیات اچھی حالت میں ملنا بڑی کامیابی ہے۔

پرندوں کے حوالے سے چھپے رازوں سے تحقیق میں پردہ اٹھنے کی امید پیدا ہوگئی ہے۔نئی تفصیلات سامنے آئیں گی۔

بیلجیئم(ویب ڈیسک)

 

تبصرے