Urdu News and Media Website

کرونا وائرس نے پاکستان میں پنجے گاڑ لیے ،تعداد184ہوگئی

پاکستان میں کرونا وائرس نے پنجے گاڑ لیے ،ملک بھر میں کرونا وائرس کے کیسز کی تعداد 150ہوگئی،سند ھ میں کرونا کے 184کیسز سامنے آگئے۔

کرونا وائرس نے پاکستان میں بھی پنجے گاڑ لیے ،ملک بھر میں کرونا کے مریضو ں کی تعداد 137ہوگئی،کرونا کے زیادہ کیسز کی تعداد سندھ میں سامنے آئی ہے جہاں صوبے بھر میں 150مریض سامنے آچکے ہیں۔

سندھ حکومت کے ترجمان نے بتایا ہے کہ تفتان سے سکھر آنے والے اب تک 122 افراد میں
کورونا وائرس کی تصدیق ہوچکی ہے جبکہ 27 کیسز کراچی اور ایک کا تعلق حیدرآباد سے ہے۔
بلوچستان کے سرحدی علاقے تفتان میں قائم قرنطینہ ہاؤس سے سکھر پہنچنے
والے افراد میں سے 104 کا کورونا کا ٹیسٹ مثبت آیا ہے جس کے بعد
سکھر میں متاثرہ افراد کی تعداد 122 ہوگئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں: قوم کو گھبرانے کی ضرورت نہیں،ذاتی طور پر نگرانی کر رہا ہوں:وزیراعظم عمران خان

دوسری جانب خیبر پختونخوا میں بھی کرونا وائر س کے 15کیس سامنے آگئے ہیں۔
اس سے قبل خیبر پختونخوا میں کرونا کا کوئی کیس موجود نہیں تھا۔

خیبر پختونخوا کے وزیر صحت تیمور سلیم جھگڑا نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ
ٹوئٹر کے ذریعے تصدیق کی ہے کہ خیبر پختونخوا میں 15 کرونا کیسز سامنے آئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: پاکستان میں کرونا وائرس :ماسک نہیں مل رہا تو آپ کو کیا کرنا چاہیے ؟

واضح رہے کہ پاکستان میں اب تک کرونا وائرس کے کیس کی تعداد 184ہوگئی ہے۔

جن میں سندھ سے 104، خیبر پختونخوا میں 15، بلوچستان میں 10، اسلام آباد میں 4،
گلگت بلتستان میں 3 اور پنجاب میں کرونا وائرس کے 2کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔

پنجاب میں سامنے آنے والے 2کیسز میں سے ایک کا تعلق لاہور جبکہ دوسرے کا ملتان سے ہے۔

یہ بھی پڑھیں: کرونا وائرس کیا ہے؟ کہاں سے آیا اور کیسے پھیلا؟

اس کی علامات کیا ہیں؟

عالمی ادارہ صحت(ڈبلیوایچ او) کے مطابق کورونا وائرس کی علامات میں
سانس لینے میں دشواری، بخار، کھانسی اور نظام تنفس سے جڑی دیگر بیماریاں شامل ہیں۔

اس وائرس کی شدید نوعیت کے باعث گردے فیل ہوسکتے ہیں،
نمونیا اور یہاں تک کے موت بھی واقع ہوسکتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں: عالمی وبا کرونا وائرس کی کتنی اقسام، زیادہ خطرناک کون سی ہے

ماہرین صحت کی ہدایات

ماہرین نے شہریوں کرونا وائرس سے بچاؤ کیلئے عالمی ادارہ صحت کی سفارشات
کے مطابق ہدایات دیں ہیں جن ماہرین کا کہنا ہے کہ لوگوں کو بار بار صابن سے
ہاتھ دھونے چاہئیں اور ماسک کا استعمال کرنا چاہیئے اور بیماری کی صورت میں
ڈاکٹر کے مشورے سے ادویات استعمال کرنی چاہیئے۔

کراچی(نیوز نامہ)

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.