Urdu News and Media Website

عافیہ کا کیس حکمرانوں کی نظر میں عام پاکستانی شہریوں کی قدر و منزلت کا تعین کررہا ہے:فوزیہ صدیقی

قوم کی بیٹی ڈاکٹر عافیہ کی ہمشیرہ اور عافیہ موومنٹ کی رہنما ڈاکٹر فوزیہ صدیقی نے کہا ہے کہ

عافیہ اور اس کے تین کمسن بچوں کے اغواء کی ایف آئی آر 6 سال بعد 2009 ء میں درج کی گئی تھی

جس سے اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ پاکستان میں ایک عام شہری کی کیا قدرومنزلت ہے

اور ان کیلئے انصاف کا حصول کتنامشکل ہے۔

یہ بھی پڑھیں:ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو واپس لایا جائے: طیبہ ضیاء چیمہ

وہ ٹیکساس امریکہ سے آئے ہوئے پاکستانی نژاد امریکی صحافی ایڈوکیٹ اظہر غیور سے

اپنی رہائش گاہ پر ملاقات کے موقع پر گفتگو کررہی تھیں

اس موقع پر سماجی رہنما انجینئر وسیم فاروقی، نفیس احمد خان اور قرآن ڈاٹ کام کے شفیق اجمل بھی موجود تھے۔

ڈاکٹر فوزیہ صدیقی نے صحافی اظہر غیور کو2003 ء میں ڈاکٹر عافیہ اور

اس کے تین کمسن بچوں کے اغواء سے لے کر اب تک صورتحال سے آگاہ کیا ۔

انہوں نے کہا کہ عافیہ کا کیس ہمارے حکمرانوں کی نظر میں

عام پاکستانی شہریوں کی قدر و منزلت (Value of a Pakistani Citizen) کا تعین کررہا ہے ۔

یہ بھی پڑھیں:ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی بیٹی کی بے بسی، بڑی خوشخبری ماں کو نہ سنا سکی

اس موقع پر پاکستانی نژاد امریکی صحافی ایڈوکیٹ اظہر غیورنے

ڈاکٹر فوزیہ صدیقی کو یقین دلایا کہ وہ امریکہ واپس جا کر ہر فورم پر ڈاکٹر عافیہ کی رہائی کیلئے آواز بلند کریں گے۔
کراچی (نیوزنامہ )

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.