Urdu News and Media Website

نقد رقم، کریڈٹ کارڈ کی ضرورت ختم،رقم کی ادائیگی اب چہرے سے ہوگی

بیجنگ(ویب ڈیسک) نقد رقم، کریڈٹ کارڈ، بٹوے اور اسمارٹ فون وغیرہ کی ضرورت ختم ہوتی نظر آرہی ہے کیونکہ اب رقوم کی ادائیگی چہرے کی شناخت سے ہوگی۔
جی ہاں!اب نقد رقم، کریڈٹ کارڈ، بٹوے اور اسمارٹ فون وغیرہ کی ضرورت ختم ہوتی جارہی ہے کیونکہ بہت سی دکانوں پر اور شاپنگ مالز میں خریداری کرنے کے بعد، رقوم ادا کرنے کےلیے صارفین کو ادائیگی کے مقام (پوائنٹ آف سیل) پر پہنچ کر اپنا چہرہ صرف چند سیکنڈ کےلیے ایک مشین کے سامنے کرنا ہوتا ہے۔
مشین کا خودکار ’’قیافہ شناس‘‘ نظام سب سے پہلے صارف کا چہرہ شناخت کرکے، سرکاری ڈیٹابیس میں موجود اس کی تمام معلومات تک رسائی حاصل کرتا ہے؛ جن میں اس کے بینک اکاؤنٹ کی تفصیلات بھی شامل ہوتی ہیں۔ تصدیق مکمل ہوجانے کے بعد، یہی نظام اس خریدار کے بینک اکاؤنٹ سے مطلوبہ رقم، متعلقہ دکان کے بینک اکاؤنٹ میں منتقل کردیتا ہے۔ دلچسپی کی بات یہ ہے کہ اس پورے عمل میں صرف چند سیکنڈ لگتے ہیں جبکہ غلطی کا امکان بھی تقریباً نہ ہونے کے برابر ہے۔
اب اسے مزید پختگی اور معمولی رد و بدل کے ساتھ، انفرادی لین دین اور ادائیگیوں میں بھی استعمال کیا جارہا ہے۔ کچھ لوگوں کو اس پر شدید اعتراض بھی ہے کیونکہ ان کے نزدیک یہ ٹیکنالوجی حکومت کی جانب سے منفی عزائم کی تکمیل میں بھی استعمال کی جاسکتی ہے۔
قیافہ شناسی میں مصنوعی ذہانت سے استفادہ کرنے میں چین نے مغربی ممالک کو بہت پیچھے چھوڑ دیا ہے۔ شاید یہی وجہ ہے کہ امریکا اور یورپ کے ناقدین نے اس ٹیکنالوجی پر یکے بعد دیگر اعتراضات کی بارش کر رکھی ہے۔ البتہ، یہ یقینی ہے کہ قیافہ شناسی میں ترقی ایک ایسا انقلاب ہے کہ جسے روکنا اب کسی کے بس میں نہیں رہا ہے۔

تبصرے