Urdu News and Media Website

یوکرائین کے بحری جہازوں کی روسی سرحد بلیک سی سے اوزوی میں انٹری

اسلام آباد( احسان منصور )25 نومبر کو تین یوکرائین کے بحری جہاز بلیک سی سے اوزوی کی طرف روانہ ہوئے جو کہ روس کی سرحد ہے سٹریٹ کرچ میں روسی سیکورٹی گارڈز کی طرف سے وارنینگ کو جان بوجھ کے نظر انداز کیا گیا اور انہوں نے اپنی گنز کے کورز بھی اتار رکھے تھے بہت بار وارن کرنے کے باوجود جب وہ باز نہ آئے تو روسی گارڈز کو مجبور ہو کے ان پر فائیر کرنے پڑے اسکے بعد یوکرائین کے جنگی جہازوں کو پورٹ پر لایا گیا یوکرائین کے فوجی معمولی زخمی ہوئے تھے جس کو میڈیکل سہولت دی گئی بہت بڑی تعداد میں بندوقیں اور مختلف اسلحہ برآمد ہوا جس سے صاف ظاہر ہے کہ یوکرائین کے مقاصد کیا تھے ان حملہ آواروں کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا اور Ker ch Yeni kale کینال کو عام لوگوں کیلئے بند کر دیا گیا بعد میں 26 نومبر کو اسکو کھول دیا گیا اور Navigation نارمل ہو گیا یوکرائین کے فوجی آب روس کے پاس ہیں تا کہ وہ گواہ بن سکیں اور ان میں سے ایک نے عیطرف کیا ہے کہ یوکرائین کی یہ کاروائی عالمی قوانین کی خلاف ورزی ہے ان لوگوں کو یوکرائین کی طرف سے یہی کہا گیا تھا کہ روس کے سیکورٹی گارڈنز کی بات نہيں ماننی Mr. vasily G ritask جو کہ یوکرائین کے سیکورٹی سروس کے ہیڈ ہیں اس نے بعد میں کنفرم کیا کہ کیۓ جہاز میں counterintelligence کے لوگ موجود تھے جو کہ خاص میشن پر تھے سٹریٹ کرچ روس کے اندورنی سمندر کا حصہ ہے اور 2003 میں دونوں ملکوں میں ایگری منٹ ہے کہ اوز وکے راستہ میں آنے سے پہلئے کم از کم 48 اسکے بعد 24 اور پھر 4 گھنٹے پہلے، اطلاح کی جائے اس علاقے میں سٹریٹ کرچ کی بہت تعداد میں جہاز گزارتے ہیں اور یوکرائین کی یہ حرکت دونوں ممالک کے درمیان ضابطہ کی خلاف ورزی ہے اور انہوں نے عام لوگوں کی زندگیوں کیلئے بھی خطرہ کھڑا کر دیا تھا اور اقوام متحدہ کے آرٹیکل 19 اور 21 کیخلاف ورزی ہے 25 نومبر سے پہلے تک یوکرائین کی اٹھارٹی کو اس اصول کا اچھی طرح سے معلوم تھا مگر انہوں نے جان بوجھ کر اسکی خلاف ورزی کی یہ انہوں نے مغربی قوتوں کے کہنے پر کیا تا کہ روس کو اشتعال دلایا جائے روس کے خلاف جو مہم چلائی ہوئی ہے اس میں یوکرائین روسی سفارت خانہ پر حملہ بھی بھول گیا جو اسکی سرزمین پر ہوا تھا 27 نومبر کو Kiev میں روس کے سفارتخانہ کو یوکرائین کے انتہاپسند عناصر نے پولیس کے ساتھ ملکر حملہ کا نشانہ بنایا اسکے علاوہ حملہ آورں نے Lv ov کے علاقہ میں روسی سفارتحانہ کے گیٹ کے سا منے ٹائیر جلائے اور روسی کونسلیٹ جنرل kharkov ميں آگ کے گولے بلدینگ میں پھینکے لحاظہ روس کی یہ ڈیمانڈ ہے کہ ویانہ کنونشن 1961 کے مطابق روس کی تمام سفارتخانے جو کے یوکرائین میں موجود ہیں کو تحفظ فراہم کیا جائے اور جن شرپسند عناصر نے حملہ کیا ہے ان کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.