Urdu News and Media Website

ہرنولی:اسسٹنٹ کمشنر پپلاں شاید عباس کا ناجائز تجاوزات کے خلاف آپریشن

ہرنولی(غلام عباس) اسسٹنٹ کمشنر پپلاں شاید عباس نے حکومت پنجاب کی طرف سےدی گئی پالیسی کے مطابق ڈی سی میانوالی کی صدارت میں ہونے والے اجلاس میں سرکاری اراضی اور زمینوں پر ناجائز قبضے فوری طور پر ختم کرانے کے لیئے جاری ہدایات پر فوری عمل در آمد کے لیئے تحصیل پپلاں میں ناجائز تجاوزات کے خلاف آپریشن کا آغاز کر دیا ۔ چک نمبر 3/4 ایم ایل سے ناجائز تجاوزات ختم کرانے کے بعد محکمہ مال عملہ انٹی انکروچمنٹ فورس اور پولیس کی نفری کے ہمراہ ہرنولی میں تجاوزات کے خلاف آپریشن کلین اپ شروع کرا دیا اس موقع پر اڈے اور شہر سمیت سڑک پر موجود تمام ناجائز تجاوزات کو بلڈوز کر دیا گیا جس لاری اڈہ ھرنولی پر سرکاری جگہ بنے پختہ تھڑے چنگ چی رکشہ کے ناجائز اڈے دوکانوں کے سامنے چبوترے سبزی فروٹ کی ناجائز تجاوزات سڑک پر قائم ویگن اڈے اور کے علاوہ ریڑھی بانوں کے اڈوں کو ختم کردیا گیا شامل تھیں۔اس موقع پر اسسٹنٹ کمشنر پپلاں شاید عباس نے میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ناجائز تجاوزات کے مکمل خاتمہ کے لیئے تحصیل بھر کے تمام بڑے شہروں پپلاں کندیاں ہرنولی حافظ والا میں بازاروں اور سڑکوں کے ارد گرد تمام تجاوزات کا خاتمہ کیا جائے گا انہوں نے کہا کہ تحصیل بھر کے تمام چکوک اور دیہاتوں میں بھی موجود سرکاری اراضی عوامی گزرگاہوں قبرستانوں سکولوں اور رفاع عامہ کے لیئے مختص اراضی کو بھی ناجائز تجاوزات سے پاک کر دیا جائے گا اور تمام ناجائز قابضین کے خلاف بلا تفریق کاروائی کی جائے گی۔

انہوں نے اس موقع پر میڈیا کے نمائندوں تاجروں اور شہریوں سے کہا کہ وہ تحصیل بھر میں ناجائز تجاوزات کے خاتمے کے لیئے ایسے مقامات کی نشان دہی کریں اور متاثرہ شہری اس سلسلہ میں اپنی شکایات اسسٹنٹ کمشنر دفتر میں جمع کروایں تاکہ ان شکایات کا مکمل ازالہ کیا جائے اس موقع پر ہرنولی کے شہریوں کے وفد نے اسسٹنٹ کمشنر پپلاں شاید عباس سے ملاقات کی اور ہرنولی کے بڑے قبرستان کے 38 ایکڑ رقبے پر بااثر شخصیات کے ناجائز قبضہ کے متعلق بتایا کہ ہرنولی کے بڑے قبرستان کے 38 ایکٹر رقبہ پر شہر کے کچھ با اثر افراد کا ناجائز قبضہ ہے اور اشٹام پیپرز پر قبرستان کے رقبے کو اپنی ملکیت ظاہر کرکے فروخت کیا جارہا ہے جبکہ محکمہ مال کی جانب سے ایک سال قبل اس زمین کا قبرستان کے نام انتقال بھی ہوچکا ہے جو کہ اب رفاع عامہ کے لیئے مختص کردہ زمین ہے ۔انہوں نے کہا کہ قبرستان میں میت کی تدفین کے لیے آئے روز تو تکرار جھگڑے معمول بن چکے ھیں ہو سکتا یہ معمولی جھگڑے کسی بڑے نقصان کا باعث نہ ثابت ھوں اس لیئے اسے فوری طور پر واگزار کرایا جائے جس پر اسسٹنٹ کمشنر نے موقع پر جاکر معائنہ کیا اور محکمہ مال عملہ سے فوری رپورٹ طلب کرتے ہوئے علاقہ مکینوں کو مسئلہ حل۔کرانے کی یقین دہانی کرائی جس پر علاقہ مکینوں نے ناجائز تجاوزات کے خاتمے کے لیئے جاری آپریشن پر انکا شکریہ ادا کرتے ہوئے زبردست الفاظ میں ڈی سی میانوالی اور اسسٹنٹ کمشنر کو خراج تحسین پیش کیا۔


جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.