Urdu News and Media Website

قانون کی بالادستی کے لیے ملک کے ڈیڑھ لاکھ وکلاء چیف جسٹس کے ہمرکاب ہیں: اشرف عاصمی ایڈووکیٹ

لاہور(نیوزنامہ )قانون کی بالادستی کے لیے ملک بھر کے ڈیڑھ لاکھ وکلاء چیف جسٹس کے ہمرکاب ہیں۔ وکلاء نے ہمیشہ قانون کی سربلندی کے لیے قربانیاں دی ہیں۔ فوجی آمریت آئین کو پامال کرتی رہی اور موجودہ حکمران عدلیہ کا تمسخر اُڑا رہے ہیں۔اِن خیالات کا اظہار انسانی حقوق کے علمبردار اور مصطفائی جسٹس فورم انٹرنیشنل کے سربراہ صاحبزادہ اشرف عاصمی ایڈووکیٹ نے لاہور ہائی کورٹ بار کے ڈیمو کریٹک لان میں اعلیٰ عدلیہ کے ساتھ یک جہتی کے سلسلے میں منعقدہ وکلاء کے ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، اشرف عاصمی نے مزید کہا کہ عدلیہ بھی اب نظریہ ضرورت کو دفن کردے اور قانون شکن کو ایک ہی ترازو میں تولے۔ تاکہ انصاف ہوتا ہوا نظرآئے۔ اشرف عاصمی کا کہنا تھا۔ کہ سولین ڈکٹیٹر شپ فوجی ڈکٹیٹر شپ سے بھی زیادہ خطرناک ہے۔ جس میں میں نہ مانوں کی رٹ لگائی جارہی ہے۔ اعلیٰ عدلیہ مشرف کے خلاف بھی قانونی کاروائی کرئے اور الطاف حسین کو بھی انٹر پول کے ذریعے سے پاکستان لا کر پھانسی دی جائے۔ اِس موقع پر نعمان ایڈووکیٹ اور دیگر وکلاء نے بھی خطاب کیا

تبصرے