Urdu News and Media Website

ڈسکہ کی اہم خبریں

طالبات کو چھیڑنے سے منع کرنے پر اوباش نوجوانوں کی پولیس اہلکاروں سے بدتمیزی
ڈسکہ(پرویز عالم بٹ)طلباء سے چھیڑ خانی کر نے سے منع کر نے پر دو نوجوانوں کی تھانہ سٹی کے دو اہلکاروں سے بدتمیزی گلوگیر ہو گئے تفصیل کے مطابق گورنمنٹ گرلز کالج برائے خواتین کے قریب طلباء ایک دوسرے سے چھیڑ خانی کر رہے تھے کہ اسی اثناء میں تھانہ سٹی پولیس کے اہلکار محمد جاوید وغیرہ گشت کرتے ہو ئے اس طرف آ نکلے انہوں نے طلباء کو چھیڑ خانی سے منع کیا تو ملزمان عدیل ،اور عاطف باز نہ آئے اور پولیس اہلکاروں کو دھمکیاں دیں اور ان سے گلوگیر ہو گئے تھانہ سٹی پولیس نے دونوں ملزمان کو گرفتار کر کے تھانہ سٹی میں مقدمہ درج کرادیا ۔

تیز رفتار ڈرائیونگ کر نے اور سلنڈر ناقص ہونے پر 20گاڑیوں کو قبضہ میں لے لیا گیا
ڈسکہ(پرویز عالم بٹ)پٹرولنگ پوسٹ گلوٹیاں کی کارکردگی حادثات کی شرح کو کنٹرول کر نے کے لیئے تیز رفتار ڈرائیونگ کر نے اور گاڑیوں میں ناقص سلنڈر لگوانے والی 20گاڑیوں کو قبضہ میں لے لیا تفصیلات کے مطابق پٹرولنگ پوسٹ گلوٹیاں کے انچاری اے ایس آئی یاسر محبوب کی سربراہی میں دیگر اہلکاروں نے دوران گشت تیز رفتار ڈرائیونگ کر نے والی گاڑیوں ،اور مسافر گاڑیوں میں ناقص سی این جی سلنڈر استعمال کر نے والی 20گاڑیوں کو قبضہ میں لے کر ان کے ڈرائیوروں کے خلاف مختلف تھانہ جات میں الگ الگ مقدمہ جات درج کر وائے ۔

ٹریفک پولیس دھواں چھوڑنے والی گاڑیوں کے خلاف کاروائی کرنے سے گریزاں
ڈسکہ(پرویز عالم بٹ)دھواں چھوڑتی گاڑیاںاور بھٹہ خشت سے نکلنے والا دھواں فضائی آلودگی کا سبب بن رہا ہے ٹریفک پولیس دھواں چھوڑنے والی گاڑیوں کے خلاف کاروائی کرنے سے گریزاں تفصیلات کے مطابق ڈسکہ شہر اور گردو نواح میں دھواں چھوڑتی گاڑیاں اور بھٹہ خشت سے نکلنے والادھواں جو انسانی صحت کے لیئے انتہائی مضر ہے فضائی آلودگی کا سبب بن رہا ہے جس کی وجہ سے بچے بوڑھے جوان مردو خواتین سانس کے امراض اور خاص طور پر دمہ کے مرض میں مبتلا ہو رہے ہیں ٹریفک پولیس دھواں چھوڑنے والی گاڑیوں کے خلاف کاروائی کرنے سے گریزاںہے جبکہ محکمہ صحت و دیگر متعلقہ ادار ہ جات بھی ایسی گاڑیوں اور بھٹہ خشت کے مالکان کے خلاف کسی قسم کی کو ئی کاروائی نہیں کر رہے شہریوں نے اعلی حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ دھواں چھوڑنے والی گاڑیوں اور بھٹہ خشت کے مالکان کے خلاف جو فضائی آلودگی پھیلانے کا سبب بن رہے ہیںکے خلاف قانونی کاروائی کی جائے اور فضائی آلودگی کو ختم کرنے کے لیئے مثبت اقدامات کیئے جائیں تاکہ آنے والی نسل موذی مراض سے محفوظ رہ سکے۔

تبصرے