Urdu News and Media Website

چین کے غیرملکی زرمبادلہ کے ذخائر3.14ٹریلین ڈالر پر پہنچ گئے

بیجنگ (مانیٹرنگ ڈیسک )چین کے غیر ملکی زرمبادلہ کے ذخائر دسمبر میں ایک سال سے زیادہ عرصے میں اپنی بلندترین سطح پر پہنچ گئے اور ان میں توقع سے زیادہ تیزی سے اضافہ ہوا ہے۔اعدادوشمار کے مطابق یہ اضافہ سخت ضوابط اور مضبوط یوآن کے سرمائے کے باہر جانے کی مسلسل حوصلہ شکنی کرنے کی وجہ سے ہوا ہے، مسلسل گیارہویں مہینے ذخائر میں اضافہ ہونے کے بعد محفوظ ذخائر دسمبر میں 20.2بلین ڈالر سے بڑھ کر 3.14ٹریلین ڈالر تک پہنچ گیا جو ستمبر 2016ء کے بعد سے سب سے زیادہ ذخائر اور جولائی کے بعد سے سب سے بڑا ماہانہ اضافہ ہے ۔یہ بات اتوار کو مرکزی بنک کے اعدادوشمار میں بتائی گئی ہے،نومبر میں غیرملکی زرمبادلہ کے ذخائر میں 10بلین ڈالر کا اضافہ ہوا ۔رائٹر کی طرف سے جائزہ لیے جانیوالے ماہرین اقتصادیات نے توقع ظاہر کی تھی کہ زرمبادلہ کے ذخائر 6بلین ڈالر سے بڑھ کر 3.125ٹریلین ہو جائیں گے،2017ء کے آغاز میں سرمایہ کے ملک سے باہر جانے کو چین کیلئے ا ہم رسک خیال کیا جاتا رہا تا ہم سرمائے پر سخت کنٹرول اورڈالر کی شرح میں کمی بیشی نے چینی کرنسی کی شرح میں زبردست تبدیلی رونما کرنے میں مدد ملی اور اس طرح معیشت پر اعتماد کو فروغ حاصل ہوا ، دسمبر کے اواخر میں سونے کے محفوظ ذخائر کی مالیت نومبر کے اواخر میں 75.833بلین ڈالر سے بڑھ کر 76.47بلین ڈالر ہو گئی ۔یہ بات پیپلز بنک آف چائنا کی ویب سائٹ پر دیئے گئے اعدادوشمار میں بتائی گئی ہے ۔

تبصرے