Urdu News and Media Website

ہیلتھ کیئر کمیشن کیخلاف ہیومن رائٹس سیل کا سوالنامہ جاری

معلومات فراہم نہ کرنے پر پاکستان جسٹس اینڈ ڈیموکریٹک پارٹی کے ہیومن رائٹس سیل نے پٹیشن دائر کر دی

لاہور(نیوزنامہ)ہیلتھ کیئر کمیشن کی ناقص کاگردکی ،اختیار سے تجاوز کرنے کی بہت زیادہ شکایات موصول ہونے پر پاکستان جسٹس اینڈ ڈیمو کرٹیک پارٹی کے ہیومن رائٹس سیل نے سوالنامہ جاری کر دیا ۔چیف انفارمیشن کمیشن میں ہیلتھ کیئر کمیشن کے خلاف پٹیشن دائر کر دی ۔یہ پٹیشن ہیومن رائٹس سیل کے صدر مدثر چوہدری ،عمیر جاوید،رانا رحمان، عمران جاوید، غلام مجتبیٰ چوہدری ایڈووکیٹس کے زریعے دائر کر دی گی جس میں یہ استدعا کی گی کہ کہ ہیلتھ کیئرکمیشن کے چیئرمین کے خلاف توہین عدالت کی کا روئی کی جائے۔ اور ہم کو معلومات دی جائیں کیونکہ انفارمیشن ایکٹ کے مطابق ہر شہری کو یہ حق حاصل ہے کہ وہ معلومات حاصل کر سکے۔ جس پر درخواست گزار نے ایک پٹیشن دائر کی کہ مجھے آئین پاکستان اور انفارمیشن ایکٹ کے تحت معلومات دی جائیں کہ آپ لوگ کس قانون کے تحت کلینک کو سیل کرتے ہیںآج تک کتنے کلینک سیل کئے اور وجہ کیا تھی؟ کلینکوں میں جا کر بدتمیزی کرنے کی شکایات کیوں موصول ہو رہی ہیں ؟کیا اپنے ہی لو گوں کی جھوٹی شہادت دے کر کلینک سیل کر دیتے ہیں اور اپ کو اس کی سزا کا پتہ ہے ؟ جو سرکاری نمبر دیا گیا ہے اس کو کیوں ریسیو نہیں کیا جاتا ؟
اس سوال نامہ کا جواب نہ دینے پر جب انفارمیشن کمیشن میں پٹیشن دائر کی تو نہ صرف نا مکمل جواب دیا گیا بلکہ دھمکی کے انداز میں مکمل جواب دینا بھی مناسب نہ سمجھا گیا ۔جس کی بابت انفارمیشن کمیشن میں پٹیشن دائر کر دی گی اور اس میں استدعا کی گی ہے کہ چیئرمین کے خلاف کاروئی کر کے فارغ کیا جائے اور انفارمیشن دی جائے جس کے وہ آئین کے تحت پابند ہیں اس کے علاوہ جھوٹی شہادت دینے والوں کو سزا دی جائے۔

تبصرے