Urdu News and Media Website

کسٹم حکام نے کچھوے کے گوشت کی سمگلنگ ناکام بنا دی

پاکستانی کسٹم حکام نے سمگلنگ کی کوشش ناکام بناتے ہوئے کراچی کی بندرگاہ سے کچھوے کا ہزاروں کلوگرام گوشت قبضے میں لے کر کریمنل اور جنگلی حیات سے متعلق قوانین کے تحت مقدمہ درج کر لیا ہے اور ذمہ دار افراد کو گرفتار کرنے کی کوششیں جاری ہیں۔یہ گوشت تقریباً 4,000 کچھوے ہلاک کر کے حاصل کیا گیا تھا اور اسے کراچی کی بندرگاہ سے بیرون ملک اسمگل کیا جا رہا تھا اور اس پر مچھلی کے گوشت کا لیبل لگایا گیا تھا۔
تفصیلات کے مطابق پاکستانی کسٹم حکام نے جمعے کے روز کچھوے کا تقریباً 2 ٹن گوشت سمگل کرنے کی کوشش ناکام بناتے ہوئے ہزاروں کلوگرام گوشت قبضے میں لے لیا جسے ہانگ کانگ سمگل کیا جا رہا تھا۔ محکمہ کسٹمز کے ایک سینئر اہلکار عرفان جاوید کے مطابق پاکستانی کسٹمز کی تاریخ میں کچھوو¿ں کے گوشت کی یہ سب سے بڑی کھیپ ہے جسے قبضے میں لیا گیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ گوشت تقریباً 4,200 کچھوے مار کر حاصل کیا گیا تھا اور بین لاقوامی منڈی میں اس گوشت کی قیمت 60 لاکھ ڈالر سے زائد بنتی ہے۔ حکام کا کہنا ہے کہ جو کمپنی یہ گوشت سمگل کر رہی تھی وہ کراچی میں ڈیفنس کے علاقے میں رجسٹرڈ ہے اور یہ گوشت ہانگ کانگ میں ایک چینی درآمد کنندہ تک پہنچایا جانا تھا۔ عرفان جاوید کا کہنا تھا کہ اس کیس میں کسٹمز حکام ورلڈ وائلڈ لائف فنڈ کے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں اور گوشت کی جانچ پڑتال کیلئے نمونے لیبارٹری میںب ھیج دیئے گئے ہیں تاکہ ہلاک کئے گئے کچھوﺅں کی نسل کا صحیح طور پر پتہ چلایا جا سکے۔

تبصرے