Urdu News and Media Website

ناجائز تعمیرات نے لاہور کے ماسٹر پلان کی شکل ہی بگاڑ دی، ایل ڈی اے شعبہ ٹاؤن پلاننگ کے افسران ملوث

لاہور(علی جنید) لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی نے حکومت پنجاب اور محکمہ خزانہ کی پالیسیوں کو بالائےطاق رکھتے ہوئے خودساختہ اور من گھڑت فرسودہ طریقہ کار نافذ کر لیا ہے جس کے باعث ریونیو کی مد میں محکمہ کو ماہانہ کروڑوں روپے خسارہ کا سامنا ہے۔

اس خسارہ میں ایل ڈی اے کی جانب سے شعبہ ٹاؤن پلاننگ مرکزی کردار ادا کر رہا ہے جو کہ حکومت پنجاب کی توجہ کی طلب ہے ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ فیروزپور روڈ پر لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی شعبہ ٹاؤن پلاننگ نے لاہور کے ترقیاتی ماسٹر پلان کی شکل ہی بگاڑ کر رکھ دی ہے اور بلڈنگ بائی لاز کی دھجیاں بکھیر دی گئی ہیں ۔

فیروزپور روڈ پر ایل ڈی اے کی جانب سے کسی بھی قسم کے عمارتی نقشہ اور کمرشلائزیشن فیس کی ادائیگی کے بناء ہی شب و روز بلند و بالا عمارات تعمیر کی جا رہی ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ایسی ہی غیر قانونی تعمیرات میں سے فیروزپور روڈ نشتر کالونی میٹرو بس ڈپو ٹرن کے قریب مسلم لیگ (ن) کے رہنما رانا خالد قادری نے 20 مرلے میں منی مارٹ تعمیر کی ہے جس میں 12 مرلے اور 8 مرلے کی 2 دکانیں تعمیر کی گئی ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ مین فیروزپور روڈ پر یہ تعمیرات ایل ڈی اے شعبہ ٹاؤن پلاننگ کی ملی بھگت سے نہایت قلیل مدت میں تعمیر کیا گیا ہے ۔ اس غیر قانونی تعمیر پر شعبہ ٹاؤن پلاننگ نے ناجائز طریقہ کار اختیار کرتے ہوئے صرف اپنی جیبیں بھری ہیں جبکہ اس عمارت کا ایل ڈی اے سے کوئی نقشہ منظور نہیں کروایا گیا ہے اور نہ ہی اس کمرشل عمارت کی کمرشلائزیشن فیس سرکاری خزانے میں جمع ہوئی ہے جس سے شعبہ ٹاؤن پلاننگ کی (مک مکا ) پالیسی واضح ہو رہی ہے ۔

فیروزپور روڈ پر مذکورہ 20 مرلہ کی عمارت جو کہ ایل ڈی اے کے بائی لازء کے برعکس تعمیر کی گئی اس حوالے سے ایل ڈی اے کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر غفران نے بتایا ہے کہ اس عمارت کا علم میں نہیں آ رہا کہ کہاں واقع ہے چیک کیا جائے گا کہ کس لوکیشن پر یہ تعمیر کی گئی ہے ۔

تبصرے