Urdu News and Media Website

ق لیگ کے رہنما بشارت راجہ اور سابق سینٹر پری گل آغا کے خلاف غیر شرعی تعلق رکھنے پر دائر استغاثہ کی سماعت

لاہور(نیوزنامہ) مسلم لیگ ق کے چیف آرگنائزر محمد بشارت راجہ اور ق لیگ بلوچستان سے سابق سینٹر پری گل آغا کے خلاف علاقائی مجسٹریٹ کی عدالت میں بشارت راجہ کی اہلیہ چئیرپرسن نیو ہوپ ویلفئیر آرگنائزیشن و سابق رکن اسمبلی سیمل راجہ کی جانب سے دائر استغاثہ کی سماعت ہوئی۔ سیمل راجہ کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا تھا کہ ان کے شوہر بشارت راجہ بیٹے بہروز کمال کے بہکاوے اور پریشر میں آ کر غیر شرعی اور ناجائز رشتہ بنا کر مطلقہ عورت کے ساتھ رہ رہے ہیں۔ سیمل راجہ کے وکلاء عمیر جاوید اور عدیل عارف نے فاضل عدالت کے روبرو بحث کرتے ہوئے کہا کہ بشارت راجہ نے سابقہ منکوحہ کو 2012 میں زبانی اور 2015 میں تحریری طلاق دی۔ ان کی موکلاء سے شادی سے قبل نہ صرف ان کی اور ان کے خاندان کو طلاق پری گل آغا بابت متعدد بار یقین دہانی کروائی گئی بلکہ کئی بار حلف دے کرمطلقہ عورت کوماں اور بہن جیسے مقدس رشتوں سے پکارتا رہا۔ درخواست گذار کی جانب سے فاضل عدالت سے درخواست کی گئی کہ ملزمان عوامی نمائندے ہونے کے باعث معاشرے میں غیر شرعی اور غیر اخلاقی روایات کو پروان چڑھا رہے ہیں جس کی وجہ سے آنے والی نسلیں بری طرح متاثرہوں گی، لہذا ملزمان کو قانون کے مطابق کڑی سے کڑی سزا دے کر انصاف کے تقاضے پورے کئے جائیں تاکہ معاشرے میں بڑھتی ہوئی بے راہ روی،فحاشی و عریانی کو روکا جا سکے۔

تبصرے