Urdu News and Media Website

طالبان کابل پہنچ گئے، افغان صدر اشرف غنی ملک سے فرار

طالبان کی جانب سے کابل کے گھیراؤکے بعد افغان صدر اشرف غنی اور نائب صدر امراللہ صالح افغانستان چھوڑ کرچلے گئے۔

برطانوی اخبار ٹیلی گراف نے تاجک میڈیا کے حوالے سے دعویٰ کیا ہےکہ اشرف غنی نائب صدر امراللہ صالح
کے ہمراہ کابل سے تاجکستان چلےگئے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق دونوں افراد تاجکستان کے درالحکومت دوشنبے میں ہیں اور ان کے وہاں سے کسی تیسرے ملک
روانہ ہونےکا امکان ہے۔
اس حوالے سے افغانستان کی اعلیٰ قومی مصالحتی کونسل کے چیئرمین عبداللہ عبداللہ نے بھی تصدیق کردی ہے۔
افغان میڈیا کے مطابق سوشل میڈیا پر اپنے ویڈیو بیان میں عبداللہ عبداللہ نےاشرف غنی کو سابق صدرکہتے ہوئے
تصدیق کی ہےکہ وہ افغانستان سے جاچکے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:

طالبان کابل میں داخل ہونا شروع، دارالحکومت پر حملہ نہ کرنے کا معاہدہ طے پاگیا

عبداللہ عبداللہ نے طالبان سے اپیل کی کہ وہ کابل میں داخل ہونے سے قبل مذاکرات کے لیے وقت دیں،
انہوں نے عوام سے بھی اپیل کی ہےکہ وہ پرامن رہیں۔
افغانستان کے قائم مقام وزیر داخلہ عبدالستار میرز کوال کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ
کابل پر حملہ نہ کرنے کا معاہدہ طے پا گیا ہے۔
جبکہ طالبان کی جانب سے صدارتی محل پر قبضے کا دعویٰ بھی کیا جارہا ہے
خیال رہےکہ 20 سال بعد طالبان افغانستان کے دارالحکومت کابل میں ایک بار پھر داخل ہورہے ہیں۔
کابل (مانیٹرنگ ڈیسک)

تبصرے