Urdu News and Media Website

سابق صوبائی وزیر قانون محمدبشارت راجہ کی4 نومبرکو پنجاب بار کونسل ڈسپلنری کمیٹی کے روبروطلبی 

لاہور(نیوزنامہ)پنجاب بار کونسل ڈسپلنری کمیٹی نے سیمل راجہ کی درخواست پرسابق صوبائی وزیر قانون اور مسلم لیگ ق کے رہنما بشارت راجہ کو 4 نومبر کو طلب کر لیا۔سا بق رکن پنجاب اسمبلی اور ان کی اہلیہ سیمل راجہ نے ان کے وقالت کے لائسنس منسوخ کی درخواست دائر کی تھی۔ سیمل راجہ نے کمیٹی کو درخواست میں موقف اختیار کیا کہ بشارت راجہ ایڈووکیٹ اپنے پیشے اور قابل احترام بار کا نام غلط استعمال کر کے میرے اثاثہ جات اور حیثیت کے درپے ہیں لہذا ان کا وقالت کا لائسنس منسوخ کر کے سائلہ کو قانونی تحفظ فراہم کیا جائے۔ سماعت کے دوران کمیٹی اراکین کی جانب سے سیمل راجہ کو انصاف کی فراہمی کی یقین دہانی کراتے ہوئے بشارت را جہ کو اصالتا یا وکالتا طلبی کے نوٹس جاری کرنے کے فوری احکامات دیدیے گئے۔ بعدازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سابق رکن پنجاب اسمبلی اور بشارت راجہ کی اہلیہ سیمل راجہ نے کہا کہ پری گل آغا اور بشارت راجہ اسلامی ملک میں غیر قانونی، غیر اخلاقی اور غیر اسلامی رشتہ بنا کر مذہب قانون اور معاشرتی اقدار کا مذاق اڑا رہے ہیں،بشارت راجہ نہ صرف شادی بلکہ پری گل آغا کو طلاق دے کر بھی مکر گئے ہیں۔

تبصرے