Urdu News and Media Website

دینی مدارس نظریاتی سرحدوں کے محافظ اورسالمیت پاکستان کے ضامن ہیں،شیخ عثمان فاروق

بہاو ل پور(نیوزنامہ) جماعت اسلامی پنجاب کے نائب امیر شیخ عثمان فاروق نے کہا ہے کہ دینی مدارس نظریاتی سرحدوں کے محافظ اورسالمیت پاکستان کے ضامن ہیں،امت کے نوجوان دینی مدارس کی حفاظت اوردفاع وطن کی خاطر کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔ وہ جامع مسجد الھدی میں جمعیت طلبہ عربیہ کے زیر اہتمام تحفظ مدارس و سالمیت پاکستان کنونشن سے خطاب کر رہے تھے انہوں نے کہا کہ مسلمان ہونے کا مطلب یہی ہے کہ ہمارا نظریہ ہماری سوچ ہماری تہذیب و تمدن سیاست و معیشت اسلام کے مطابق ہوقیامِ پاکستان کے اغراض و مقاصد یہ ہے کہ دو قومی نظریہ کی حقانیت ہوگی، قومی تشخص کا تحفظ، اسلامی ریاست کے قیام کی خواہش، اسلامی معاشرے کی تشکیل، اسلامی تہذیب و ثقافت کا تحفظ، ملک اسلامیہ کے مفادات کا تحفظ اور عالم اسلام کے اتحاد سمیت دیگر مقاصد شامل ہو.اسی مقصد کے حصول کے لئے مدارس دینیہ کے 8 لاکھ طلبہ ہر اول دستہ بننے کے لئے تیار ہے.یہ محض ایک خطہ زمین حاصل کرنا نہ تھا بلکہ ایسا ملک حاصل کرنا تھا جہاں پر مسلمان اپنی اپنی اقدار کی روشنی میں قرآن و سنت کی بالادستی کو پیش رکھتے ہوئے اپنی انفرادی و اجتماعی زندگی گزاریں۔امیر جماعت اسلامی بہاول پور سید ذیشان اختر اور جمعیت طلبہ عربیہ پنجاب کے سیکرٹری جنرل محمد قاسم نے کہا کہ مدارس دینیہ جو کہ اسلام کے قلعے ہیں اس پرکبھی آنچ نہیں آنے دیں گے کیونکہ مدارس ا کے طلبہ ہی اس ملک کے حقیقی وفادار اور محافظ ہے ملک پاکستان کی بنیاد دو قومی نظریے کی بنیاد پر معرض وجود میں آیا ہے جو کہ اصل میں انسانیت کی بنیاد ہے کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے جمعیت علماء اسلام بہاول پور کے امیر مفتی انوار الحق،جماعتہ الدعوۃ کے مولانا محمد اختر،مولانا خلیل الرحمن نے کہا کہ دینی مدارس اسلام کے قلعے ہیں پاکستان کے 30 لاکھ سے زائد طلبا ء اس گلشن کے آبیاری کرنے والے پھول ہیں۔کنونشن میں جماعت اسلامی کے ضلعی امیر ڈاکٹر محمد اشرف،تحریک صوبہ بہاول پور کے سیکرٹری جنرل نصراللہ ناصر و دیگر علماء کرام نے شرکت کی

تبصرے