Urdu News and Media Website

دنیا کے دفاعی اخراجات ایک کھرب 686ارب ڈالر سے تجاوز کرگئے،فروخت میں امریکہ،خرید میں بھارت پہلے نمبر پر

سٹاک ہوم (نیوزنامہ)25ـ31  اکتوبر تک کا ہفتہ اسلحے کے خاتمے کے لیے منایا جاتا ہے مگر آج تک اس سے اسلحے کی پیداوار میں کمی نہ ہو سکی۔ کوششوں کے باوجود نہ تو اسلحے کی پیداوار کو روکا جاسکا اور نہ ہی اس کی خرید و فروخت کو روکنے کے حوالے سے کوئی اقدامات کئے جاسکے۔ماہرین کے مطابق عالمی سطح پر دفاعی اخراجات بدستور بڑھتے جارہے ہیں اور دنیا کے دفاعی اخراجات ایک کھرب 686ارب ڈالر سے تجاوز کرگئے ہیں۔دنیا بھر میں اسلحے کی فروخت کا 75 فیصد اسلحہ صرف 5ممالک فروخت کرتے ہیں۔جن میں امریکہ،روس،چین،فرانس اور جرمنی شامل ہیں۔اس 75 فیصد حصے میں 35 فیصد حصہ امریکا کا رہا جبکہ 23 فیصد روس، 6.2 فیصد چین، 6 فیصد فرانس اور 5.2 فیصد حصہ جرمنی کا رہا۔ گزشتہ 4 برسوں کے دوران عالمی سطح پر 57ممالک نے 155 ممالک کو اسلحہ فروخت کیا اور فروخت کرنے والے ممالک میں امریکا بدستور سرفہرست ہے جبکہ دوسری جانب خریداروں کی فہرست میں  بھارت پہلے نمبر پر ہے۔اسلحہ خریدنے والے 155 ممالک میں بھارت بدستور پہلے نبر پر ہے جبکہ سعودی عرب دوسرے، متحدہ عرب امارات تیسرے، چین چوتھے اور الجیریا 5ویں نمبر پر رہا جبکہ خریداری کی فہرست میں پاکستان 9 ویں نمبر پر رہا۔ بھارت نے 68 فیصد اسلحہ روس سے‘ 14 فیصد امریکا اور 7.2 فیصد اسرائیل سے خریدا جبکہ سعودی عرب نے 52 فیصد اسلحہ امریکہ سے، 27 فیصد برطانیہ اور 4.2 فیصد اسپین سے خریدا۔ پاکستان نے 68 فیصد اسلحہ چین، 16 فیصد امریکا اور 3.8فیصد اٹلی سے خریدا۔

تبصرے