Urdu News and Media Website

بازی پلٹنے کے لیے تحریک انصاف کا بڑا اقدام

اسلام آباد ( صابر مغل سے) با وثوق ذرائع کے مطابق پاکستان تحریک انصاف۔ اسٹیبلشمنٹ اور دیگر برسر اقتدار سیاسی پارٹیوں کے درمیان بیک ڈور رابطوں کا سلسلہ پھر شروع ہو گیا۔

ذرائع کے مطابق ان رابطوں میں یہ بات سب سےزیادہ زیر بحث اور کسی منطقی نتیجہ تک پہنچنے والی ہے کہ نومبر میں ہونے والی اہم تقرری کا فیصلہ جولائی کے آخر تک کرنے کے بعد موجودہ بساط لپیٹنے کے بعد یہ سیٹ اپ نئے عبوری حکمرانوں کے حوالے کر دیا جائے جن کا اس اہم ترین تقرری میں کوئی کردار نہیں ہو گا۔

اگر اس بات پر اتفاق ہو جاتا ہے تو اسی وقت نئے عام انتخابات کا اعلان کر دیا جائے گا۔

یہ پیش رفت کس حد تک پہنچتی ہے یہ تو آنے والا وقت ہی بتائے گا۔

دوسری جانب اس وقت ملک میں امریکی لابی کا پلڑا بھاری ہے اسی وجہ سے بہت کچھ ان کی خواہشات اور توقعات کے مطابق ہو رہا ہے۔ جولائی میں ہی امریکی صدر بائڈن دورہ اسرائیل کریں گے جس میں ویڈیو لنک کے ذریعے بھارت۔اسرائیل۔ متحدہ عرب امارات اور امریکہ عالمی صورتحال اور مزید باہمی تعلقات پر مشاورت اور فیصلے کریں گے۔

اس بات میں ذرہ برابر بھی شک نہیں کہ پاکستان پر اسرائیل کے حوالے سے نرم گوشہ اختیار کرنے کا سخت ترین دباؤ ہے اور اس حکمت عملی پر کام سرعت سے جاری ہے۔

بھارت کے ساتھ کاروباری روابط بھی اسی دباؤ کا تسلسل ہیں۔

 

ذرائع کے مطابق میاں نواز شریف بھی نیب ترامیم اور چند دیگر کاموں کے ساتھ ساتھ نومبر کی تقرری بارے کسی حتمی بات ہر پہنچنے کے بعد فوری الیکشن کےحق میں ہیں

تاہم وزیر اعظم میاں شہباز شریف چین سے ملنے والے 3۔ 2 ارب ڈالر کے قرض اور آئی ایم ایف معاہدے کے بعد جو چند ہی روز میں متوقع ہے ابھی ہوا نہیں کی وجہ سے مدت پوری کرنے کا خواب دیکھ رہے ہیں۔

سابق وفاقی وزیر اسد عمر نے انکشاف کیا ہے کہ پاکستان کے ریزرو 2۔ 8 ارب ڈالر تک کی نچلی ترین سطح تک پہنچ چکے ہیں اور جن میں گذشتہ ایک ہفتہ کے دوران 248 ملین ڈالر کی کمی واقع ہوئی ہے

واضح رہے کہ تین ماہ قبل یہ ریزرو سولہ عشاریہ چار ارب ڈالر تھے۔

آئی ایم ایف معاہدہ اور چینی قرضہ ملنے کی یقین دہانی کے بعد اب حکومت شاید پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں فوری 50 روپے اضافہ نہ کرے۔

پہلے دس روپے اور اسی طرح 50 روپے تک ہی لے جائے گی۔

جیسا کہ چند روز قبل بتایا کہ ابھی ایک اور خطرناک نوعیت کا منی بجٹ تیاری کے مراحل میں ہے کیونکہ پہلا بجٹ عجلت اور IMF کے ساتھ گفت و شنید کی بنا پر عبوری طور پر بیش کر دیا اور ابھی عوام کو ساڑھے سات ارب روپے کا ٹیکہ لگنا ہے

جس کے مطابق نئے ٹیکسوں کا اعلان۔ دالوں کی قیمتوں میں اچانک بہت زیادہ اضافہ شامل ہے۔ دوسری جانب عالمی سطع پر معاشی صورتحال پر BRICS کا اجلاس چین میں شروع ہے برکس کو چین۔ برازیل ۔ جنوبی افریقہ روس اور بھارت نے مل کر آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک کے مقابلے میں بنایا تھا جس میں صرف بھارت امریکی نواز ملک ثابت ہو رہا ہے

جس کی کوشش ہے کہ برکس کانفرس کے اختتام پر جاری اعلامیہ میں کسی صورت امریکہ اور اسرائیل کا ذکر نہ ہو تاہم اس وقت بالخصوص روس امریکہ کے خلاف سخت ترین موقف کے ساتھ ڈٹا ہوا ہے۔

دنیا میں تیل کی قیمتیں بہت حد تک نیچے جا چکی ہیں مگر اس کے ثمرات پاکستانی قوم کے مقدر میں نہیں کیونکہ ان ہوش ربا قیمتوں سے حکومت اپنا خسارہ پورا کرے گی۔

تیل کی قیمتوں میں کمی کی ایک بڑی وجہ چین کا کورونا وباء کے باعث ایک بار پھر لاک ڈاؤن ہے جس سے تیل کی خریداری پر منفی اثر پڑا ہے۔

تبصرے