Urdu News and Media Website

ایل ڈی اے شعبہ ٹاؤن پلاننگ کے افسران کا بلڈنگ مافیاسے مبینہ گٹھ جوڑ، غیرقانونی تعمیرات کی بھرمار

لاہور(علی جنید ) لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی(ایل ڈی اے ) شعبہ ٹاؤن پلاننگ کے ذمہ داران مجاز افسران نے مبینہ طور پر بلڈنگ مافیا سے گٹھ جوڑ کرتے ہوئے لاہور کے بلڈنگ سٹرکچر برائے ترقی کو تباہی کے دہانے پر کھڑا کر دیا ہے

جس کے باعث جہاں ایک جانب شہر کا حسن تباہ ہو رہا ہے

تو دوسری جانب ایل ڈی اے کو سالانہ اربوں روپے کا مالیاتی خسارہ بھی ہو رہا ہے

جو کہ وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار کی توجہ کا طالب ہے

 

ذرائع کے مطابق لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی شعبہ ٹاؤن پلاننگ میں موجود بعض نااہل اور کرپٹ افسران نے جہاں شہر لاہور میں ناجائز اور پنجاب حکومت کے ماسٹر پلان کے برعکس تعیرات کا سلسلہ جاری کروا رکھا ہے

وہاں لاہور کو ضلع قصور سے ملانے والی شاہراہ فیروزپور روڈ کے دونوں جانب متعدد عمارات کی تعمیرات کا سلسلہ شب و روز کی بنیاد پر جاری ہے

یہ وہ معروف شاہراہ ہے جہاں سے قومی و صوبائی اسمبلیوں کے منتخب نمائندے روزانہ سفر کرتے ہیں

 

ایل ڈی اے کے ڈائریکٹر جنرل و چیف ٹاؤن پلاننگ آفیسر بھی مذکورہ شاہراہ کی رہورٹ حاصل کرتے رہتے ہیں

لیکن اس کے باوجود بھی اس معروف فیروزپور روڑ کے دونوں اطراف متعدد غیرقانونی عمارات، پٹرول پمپس کی تعمیر کی گئی اور مزید جاری ہے

ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ فیروزپور روڈ ایل ڈی اے کے ذمہ دار افسران نے بلڈنگ مافیا کی ملی بھگت سے جہاں شعبہ ٹاؤن پلاننگ کو کرپشن کی طرف دھکیل دیا ہے

تو دوسری جانب محکمہ ہاؤسنگ، ایل ڈی اے کو فیس نقشہ، کمرشلائزیشن کی مد میں فیروزپور روڈ پر سے ہی صرف اربوں روپے ریونیو سے محروم کرتے ہوئے اپنی جیبیں بھرنے میں مصروف عمل ہیں

 

ڈائریکٹر جنرل عزیز احمد تارڑ اگر صرف مین فیروز پور روڈ تعمیرات کی اصل حقائق پر مبنی رپورٹ طلب کریں تو صاف معلوم ہو سکتا ہے

کہ پنجاب حکومت کو ایل ڈی اے شعبہ ٹاؤن پلاننگ نے کس مقام پر لا کھڑا کیا ہے ۔ لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے ذمہ داران کے لئے یہ سوالیہ نشان ہے ؟

تبصرے