Urdu News and Media Website

برسات کے موسم میں بیماریوں سے بچاؤ کے لیے خصوصی احتیاط ضروری ہے۔ پروفیسر حکیم محمد احمد سلیمی

لاہور( نیوزنامہ) برسات کا موسم بیماریوں کے حوالہ سے انتہائی خطرناک ہوتا ہے۔ اس موسم میں معمول سے زیادہ بارشیں ہوتی ہیں،ہوا میں نمی کا تناسب بڑھ جاتا ہے ،حبس اور گرمی سے انسان کا جینا دشوار ہوجاتا ہے۔ اس موسم میں ڈائیریا،ہیضہ، بدہضمی، جوڑوں کادرد ،گرمی دانے ،پھوڑے پھنسیاں،خارش،کیل مہاسے ،پاؤں کی انگلیوں کا فنگس وغیرہ بیماریوں میں اضافہ ہوجاتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار پروفیسر حکیم محمد احمد سلیمی چیئر مین امتحانی کمیٹی قومی طبی کونسل حکومت پاکستان ، پروفیسر حکیم محمد افضل میو، پروفیسر حکیم سید عمران فیاض، حکیم احمد حسن نوری ، حکیم امجد وحید بھٹی ، حکیم فیصل طاہر صدیقی ، حکیم حامد محمود، حکیم حاجی محمد شبیر، حکیم محمد ابو بکر اور ڈاکٹر سکندر حیات زاہد نے موسم برسات ،بیماریاں اور احتیاطی تدابیر کے حوالہ سے مجلس مذاکرہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوںنے کہاکہ اس موسم میں گلی،محلو ں اور نشیبی علاقوں میں پانی کھڑا ہونے کے باعث جراثیم پیدا ہوجاتے ہیں جوکئی بیماریاں پیداکرنے کا باعث بنتے ہیں۔ان بیماریوں سے بچاؤ کیلئے اپنے گھر کی صفائی رکھیں،بچے ہوئے اناج اور پھل ڈھکن والے ڈسٹ بن میں ڈالیں،فرش فینائل وغیرہ سے دھوئیں،گھر میں نیم کے پتوں،گوگل،گندھک یا اوپلوں کی دھونی دیںیا کوئی بھی جراثیم کش ادویہ کا سپرے کریں۔ پانی ابال کر پئیں،کھانے پینے میں احتیاط برتیں۔ تربوز،کھیرا،ککڑی، امرود خربوزہ وغیرہ نہ کھائیں۔کھانے پینے والی اشیا ڈھانپ کر رکھیں۔اپنی جسمانی صفائی کا خاص خیال رکھیں،گیلا لباس نہ پہنیں۔دن میں دو مرتبہ صابن سے صاف پانی سے نہائیں۔رات کو کولر چلا کر مت سوئیں۔پروفیسر حکیم محمد افضل میو نے کہا اس موسم میں بچوں کو قلفیاں ،برف کے گولے،ریڑھیوں سے کچے پھٹے پھل اور کھٹی میٹھی اشیا نہ کھانے دیں۔بچوں کو گندے پانی اور جوھڑوں میں مت نہانے دیں۔گیلا لباس نہ پہنے اور ان کی جسمانی صفائی کا خاص خیال رکھیں۔حکیم احمد حسن نوری نے کہاکہ اس موسم میں قوت مدافعت کو قائم رکھنے کے لیے پودینہ،لیموں پیاز،لہسن ،ادرک اور سرکہ کے ساتھ گڑ کا استعمال کریں۔کھلے آسمان تلے مت سوئیں۔حکیم فیصل طاہر صدیقی نے کہاکہ اس موسم میں نزلہ ،زکام، بخار،کھانسی ، ملیریا اور بخار عام ہوتا ہے۔ ان بیماریوں سے بچاؤ کیلئے احتیاطی تدابیر پر عمل کریں۔گٹروں،جوھڑوں اور گھروں میں نمی والی جگہوں پر مٹی کے تیل کا جھڑکاؤ کریں۔ موسمی بخار سے بچاؤ کیلئے چائے کے قہوہ میں لیموں نچوڑ کر استعمال کریں۔پیٹ بھر کر کھانا مت کھائیں۔نزلہ،زکام سے بچاؤ کیلئے دارچینی ایک گرام ،ملٹھی ایک گرام اور مرچ سیاہ پانچ دانے ایک کپ پانی میں جوش دے کر استعمال کریں۔حکیم حامد محمود نے کہاکہ موسم برسات میں جلدی امراض ،مثلاً گرمی دانے ،پھوڑے پھنسیاں،خارش پاؤں کی انگلیوں کا فنگس وغیرہ پیدا ہوجاتاہے۔ ان بیماریوں سے بچنے کیلئے گرمی سے بچیں،ٹھنڈی جگہ پر اپنا زیادہ وقت گزاریں،سخت گرمی اور ورزش سے احتراز کریں،ہلکا سوتی لباس پہنیں،لطیف اور جلد ہضم ہونے والی غذاؤں کا استعمال کریں،وٹامن سی کا استعمال فائدہ مند ہے۔لیموں کی سکنجبین دن میں دومرتبہ پئیں۔گوشت، چائے،کافی،کولامشروبات کا استعمال کم کریں۔غذامیں چپاتی،گھیا،کدو، ٹینڈے،پالک،خرفہ کا ساگ،کریلے،گھیاتوری،کالے چنے کاشوربا اور مونگ کی دال استعمال کریں۔بکرے کے گوشت کا شوربا ہفتے میں ایک مرتبہ استعمال کریں۔حکیم حاجی محمد شبیر ، حکیم محمد ابو بکر اور ڈاکٹر سکندر حیات زاہدنے کہاکہ بارشوں کے پانی یا پسینہ سے پاؤں کی انگلیوں میں فنگس ہوجاتا ہے،شدید خارش ہوتی ہے اور بعض اوقات انگلیوں سے خون بہنے لگتا ہے۔ان سے بچاؤ کیلئے انگلیوں کو صاف اور خشک رکھیں۔پانی میں نہ چلیں،انگلیوں کو صاف پانی سے دھو کر خشک کرکے سگریٹ کا تمباکو لگائیں۔جسم پر گرمی دانوں سے بچاؤ کیلئے گاچنی،مٹی،پانی میں لیپ بناکر متاثرہ حصہ پر لگائیں،پودینہ کی گھٹی آدھا لٹر پانی میں رگڑ کر شکر ملا کردن میں دومرتبہ پئیں۔٭

تبصرے