میشا شفیع پھر میدان میں آگئیں

141

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک)گلوکارہ، ماڈل اور اداکارہ میشا شفیع نے ایک مرتبہ پھر الزام عائد کیا ہے کہ انہیں صرف گلوگار علی ظفر نے ہراساں کیا۔یاد رہے کہ گزشتہ ماہ میشا شفیع نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں علی ظفر پر ایک سے زائد مرتبہ جنسی ہراساں کیے جانے کا الزام عائد کیا تھا جس کی گلوکار نے تردید کردی تھی۔بعدازاں علی ظفر کی جانب سے میشا شفیع کو بھیجے گئے قانونی نوٹس میں 14 دن کے اندر معافی مانگنے اور دوسری صورت میں 100 کروڑ (ایک ارب) روپے تک ہرجانہ ادا کرنے کا مطالبہ کیا گیا تھا تاہم میشا شفیع کی جانب سے دیئے گئے قانونی نوٹس کے جواب میں کہا گیا کہ علی ظفر پر لگائے گئے تمام الزامات درست اور حقائق پر مبنی ہیں اور وہ کسی صورت یہ الزامات واپس نہیں لیں گی۔حال ہی میں ایک خاتون نے ٹوئٹر پر اپنے طنزیہ پیغام میں گلوکارہ پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ میشا شفیع کے پورے کیریئر میں انہیں بس علی ظفر نے جنسی طور پر ہراساں کیا ٗباقی سب لڑکے تو انہیں باجی بہن کہہ کر دور دور سے سلام لیتے ہیں، نہ ذاتی میسجز کرتے ہیں بلکہ نظریں جھکا کر چلتے ہیں۔مذکورہ خاتون نے میشا شفیع پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ کیا صرف علی ظفر ہی ایسے تھے، ان کے ساتھ کام کرنے والے باقی مرد دودھ کے دھلے ہیں؟ انہوں نے گلوگارہ کو چیلنج کرتے ہوئے کہا کہ اگر آپ ایک سچی خاتون ہیں تو باقی سب کا بھی نام لیں۔میشا شفیع نے مذکورہ خاتون کی جانب سے خود پر تنقیداور تمسخر اڑائے جانے کے جواب میں کہا کہ ہاں صرف علی ظفر نے مجھے ہراساں کیا لیکن اْس نے صرف مجھے ہی ہراساں نہیں کیا۔انہوں نے سوال کیا کہ کیا مزید 6 خواتین کا بھی علی ظفر کے خلاف سامنے آنا کافی نہیں؟’میشا شفیع نے شکوہ کیا کہ آخر کتنی خواتین سامنے آکر حقیقت بتائیں؟مجھے تعداد بتائیں ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.