پاک۔ چین دوستی!!

149

تحریر:لاریب فاطمہ ملک۔۔
دوستی کیا ہے؟۔دوستی نام ہے خلوص کا۔پیار کا۔اعتبار کا۔ہر مشکل میں ساتھ کا۔اس میں کوئی شک نہیں کہ پاکستان اور چین کی دوستی سمندروں سے گہری،پہاڑوں سے بلنداور شہد سے میٹھی ہے۔مشکل کی کوئی بھی گھڑی ہوپاکستان کا عظیم دوست چین ہمیشہ پاکستان کے ساتھ کھڑا نظر آتا ہے ۔گزشتہ کچھ عرصہ سے دُشمن اس دوستی میں دراڑیں ڈالنے کے درپے ہیں لیکن پاکستان اور چین کی قیادتوں نے واضح کردیا ہے کہ پاکستان اور چین کی دوستی کو دنیا کی کوئی طاقت نہیں ختم کرسکتی۔گزشتہ دنوں وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے دورہ چین پر اعلیٰ قیادت سے ملاقاتوں میں اس بات کو یقینی بنایا گیا کہ دونوں ممالک اس دوستی کو مزید مضبوط بنائینگے۔جب سے چین نے پاکستان میں سی پیک منصوبے شروع کئے ہیں تب سے یہ دوستی مزید مضبوط ہورہی ہے۔ دونوں ممالک کی قیادت کی جانب سے اقدامات کے باعث سی پیک کا خواب شرمندہ تعبیر ہو رہا ہے، گزشتہ پانچ سال میں سی پیک منصوبوں کے باعث پاکستان مسلسل ترقی کی سیڑھیاں عبور کر رہا ہے ، گزشتہ مالی سال پاکستان نے اقتصادی ترقی کی شرح 5.8فیصد حاصل کی جو کہ پچھلے 11سالوں میں بلند ترین شرح ہے۔پاکستان میں بجلی کی قلت ایک بڑا مسئلہ تھا جس پر تقریباً قابو پالیاگیا ہے۔ ساہیوال اور پورٹ قسم میں بجلی منصوبوں کی تکمیل اس بات کا عندیہ ہے کہ سی پیک کے تحت شروع کئے گئے منصوبے تیزی سے مکمل ہو رہے ہیں۔جہاں دیگر شعبوں میں دونوں ممالک ایک دوسرے کے ساتھ تعاون کررہے ہیں وہاں ،دونوں ممالک کی مسلح فورسز بھی ایک دوسرے کے ساتھ خلوص کے رشتوں میں پروئی ہوئی ہیں۔گزشتہ روز پاکستان ایئرفورس اصغر خان اکیڈمی رسالپور میں 139 جی ڈی پی 95 ایئر ڈیفنس‘ 85 ویں انجینئرنگ کورس کے کیڈٹس کی پاسنگ آئوٹ پریڈ ہوئی۔ پریڈ میں چوتھے لاجسٹک اور 20 ویں اے اینڈ ایس ڈی کورسز کے کیڈٹس بھی شریک ہوئے پاس آئوٹ ہونے والے 109 کیڈٹس میں دو سعودی بھی شامل تھے۔ چینی فضائیہ کے سربراہ لیفٹیننٹ جنرل ڈنگ لے ہینگ تقریب کے مہمان خصوصی تھے۔ پاک فضائیہ کے سربراہ مجاہد انور خان نے مہمان خصوصی کا استقبال کیا ۔چینی فضائیہ کے سربراہ نے پریڈ کا معائنہ بھی کیا۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے لیفٹیننٹ جنرل ڈنگ لے ہینگ نے کہا کہ پاسنگ آئوٹ پریڈ تقریب میں شرکت میرے لئے اعزاز ہے ۔اس تقریب نے مجھے چالیس سال پہلے کی پاسنگ آئوٹ تقریب یاد دلا دی ۔انہوں نے کہا کہ کیڈٹس کی تعلیم و تربیت کرنے والے اساتذہ کو بھی خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔سربراہ چینی فضائیہ نے اپنے تاثرات بیان کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور چین کے گہرے برادرانہ اور دوستانہ تعلقات ہیں دونوں ملکوں میں مختلف شعبوں میں تعاون موجود ہے۔ دونوں ملکوں کی مسلح افواج کے درمیان بھی گہرے تعلقات ہیں ۔انہوں نے کیڈٹس کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ملکی سلامتی اور علاقائی سالمیت کی ذمہ داریاں آپ کے کندھوں پر ہیں نئے غیر معمولی آفیسرز کی شمولیت پر پاک فضائیہ کو مبارکباد پیش کرتا ہوں۔ اب پاکستان کے دُشمنوں کو بھی جان لینا چاہیے کہ اُن کی سازشیں کبھی کامیاب نہیں ہوسکتیں،جس طرح موجودہ جمہوری حکومت کی قیادت نے ہمسائیہ برادر ممالک کے ساتھ تعلقات میں مزید بہتری لائی وہ قابل تحسین ہے ،وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے دورہ افغانستان کے بعد صورتحال مزید بہتر ہورہی ہے ،ایران سے بھی پاکستان کے تعلقات مزید بہتر ہورہے ہیں ،لیکن پاکستان کے ہمسائیہ ممالک کیساتھ تعلقات اور ترقی پاکستان کے روایتی دُشمن بھارت کو ایک آنکھ نہیں بھارہی اور اسی وجہ سے وہ آئے روز سیز لائن فائر کی خلاف ورزیوں میں مصروف ہے۔گزشتہ روز بھی ایل اوسی کے کھوئی رٹہ سیکٹر پربھارتی فوج نے سول آباد ی پرگولہ باری کی ۔گولہ باری سے ایک نوجوان زخمی ہوگیا۔پاکستان کی چٹان صفت مسلح افواج کی بھرپور جوابی کارروائی سے دشمن کی گنیں خاموش ہوگئیں۔عالمی برادری کو چاہیے کہ وہ بھارت کی مسلسل خلاف ورزیوں کا نوٹس لے اگر بھارت نے اپنی روش نہ بدلی تو پورا خطہ اشتعال انگیزی کی طرف جاسکتا ہے۔اب بھارت کو بھی چاہیے کہ وہ اپنی ناکام سازشیں چھوڑ ے اور اپنے عوام کے حال پر رحم کرے ورنہ اُسے ہمیشہ کی طرح پھر مُنہ کی کھانا پڑے گی۔

نوٹ:نیوزنامہ پرشائع ہونے والی تحریریں لکھاری کی ذاتی رائے ہے،ادارے کا متفق ہوناضروری نہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.