پاکستان کالمسٹ کلب کے زیر اہتمام معروف اداکار ، شاعر اور ادیب راشد محمود کےایک شام منانے کا اہتمام

114

لاہور(نیوزنامہ)پاکستان ادبی فورم و پاکستان کالمسٹ کلب کے زیر اہتمام معروف اداکار ، شاعر اور ادیب راشد محمود کے ساتھ گزشتہ روز ایک شام منانے کا اہتمام کیا گیا ۔الحمرا ٰہال لاہور میں منعقدہ تقریب میں کیپٹن(ر) عطاء محمد خان،محترمہ ڈاکٹر صغریٰ صدف، بابا نجمی،راشد محمود،ذبیح اللہ بلگن،عاصم بخاری،امجد اقبال،صفدر علی خان،خالد ارشاد صوفی،کرن وقار،ڈاکٹر طارق شریف زادہ،میاں اسلم،ممتاز راشد لاہوری،حکیم سلیم اختر،توقیر شریفی،تاثیر نقوی،عالیہ بخاری،شگفتہ غزل ،مسعود خان ارحم ودیگر نے شرکت کی ۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیپٹن(ر) عطاء محمد خان نے کہا کہ راشد محمود نہ صرف اچھے اداکار ہیں بلکہ وہ ایک سچے مسلمان،پکے پاکستانی اور اچھے انسان بھی ہیں ۔کیپٹن عطاء کا کہنا تھا کہ راشد محمود جیسے صاف کردار کے حامل اداکار آج کل ناپید ہیں لہذا ہمیں چاہئے کہ ہم ایسے کہنہ مشق افراد کی قدر کریں ۔ڈاکٹر صغریٰ صدف نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ راشد محمود صرف اچھے اداکار نہیں بلکہ ایک اچھے انسان ہیں ۔انہوں نے کہا کہ راشد محمود مجسمہ عاجزی ہیں اور ان کی زات میں تکبر دور دور تک دکھائی نہیں دیتا ۔پاکستان ادبی فورم کے چیئرمین ذبیح اللہ بلگن نے کہا کہ ادبی فورم نے پاکستان کے ادیبوں اور شاعروں کے تحفظ کا بیڑا اٹھایا ہے ۔ذبیح اللہ بلگن کا کہنا تھا کہ آج کے دور میں شعر کو نہیں شاعر کو بچانے کی ضرورت ہے ۔معروف پنجابی شاعر بابا نجمی نے کہا کہ راشد میرا دوست نہیں میرا یار ہے ۔بابا نجمی کا کہنا تھا کہ راشد محمود نے زندگی میں کبھی لالچ نہیں کیا بلکہ اسے جو بھی میسر آیا اس پر شاکر و صابر ہو گیا ۔معروف اداکار عاصم بخاری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ راشد محود لیجنڈ اداکار ہے اور انہوں نے ہمیشہ اپنے کام کے ساتھ انصاف کیا ہے ۔معروف و سنیئر صحافی امجد اقبال نے کہا کہ حقیقت یہ ہے کہ آ ج کے دور میں ادب کے زریعے ہی پیار و محبت کو عام کیا جاسکتا ہے ۔راشد محمود تحسین کے قابل ہیں کہ انہوں نے اپنے فن کے زریعے پیار و محبت کو عام کیا ۔معروف صحافی صفدر علی خان کا کہنا تھا کہ حقیقت یہ ہے کہ مجھے ادیبوں اور شاعروں کی محفل میں بیٹھ کی حقیقی خوشی محسوس ہوتی ہے ۔میں اور میرا اخبار ادیبوں اور شاعروں کیلئے حاضر ہے ۔ڈاکٹر طارق شریف زادہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ راشد محمود صرف اداکار نہیں بلکہ ایک صوفی ہیں اور صوفی کا اندر باہر ایک جیسا ہوتا ہے ۔محترمہ کرن وقار کا کہنا تھا کہ میں نے راشد محمود صاحب کو ہمیشہ عاجزی کا پیکر محسوس کیا ہے ۔راشد محمود صاحب نے ہمیشہ اپنے جونیئرز کی حوصلہ افزائی کی ہے ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.