عدالتی تاریخ میں پہلی بار حوا کی بیٹی کے مجرم کو7 یوم میں سزا دے کر پوری قوم کا سرفخر سے بلند کر دیا: سیمل راجہ

قوم کی بیٹیوں کے دیگر مجرمان کو بھی دہشتگردی ایکٹ کے مطابق سزائیں دی جائیں: نیو ہوپ ویلفئیر آرگنائزیشن کے عہدیداران کی چیف جسٹس آف پاکستان سے اپیل

193

لاہور(نیوزنامہ)خواتین و بچوں کے حقوق کے لئے کام کرنے والی غیر سیاسی تنظیم نیو ہوپ ویلفئیر آرگنائزیشن کے عہدیداران سیمل راجہ، محمد مدثر، غلام مجتبیٰ، سونیا نعمان، نبیلہ بٹ،عمیر جاوید،گوشی،مدیحہ و دیگر نے مجرم عمران کو عدالتی تاریخ میں پہلی مرتبہ 7 یوم میں سزا دے کر نئی تاریخ رقم کرنے پر خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ حوا کی بیٹیوں کی تذلیل کرنے والے عمران نامی درندے کو پھانسی پر لٹکانے کا حکم دے کرعدلیہ نے قوم کا سر فخر سے بلند کردیا: عدلیہ ریاست کا اہم ستون ہے سیاستدانوں کی عدم دلچسپی اور ملکی اداروں کی نا اہلی کی وجہ سے ملک بحرانوں کا شکار ہے نیو ہوپ کی چئیر پرسن سیمل راجہ نے کہاکہ اسلامی ملک اور اسلامی معاشرے میں مختلف ناموں پر حوا کی بیٹیوں کا استحصال اور ان کو ظلم و زیادتی کا نشانہ بنانے کا سلسلہ جاری ہے جو کہ پوری قوم کے لئے ندامت کا باعث ہے۔انہوں نے کہا کہ ا شرافیہ کا آلہ کار بنیپولیس ثبوت مٹانے کے لئے کاروائی میں تاخیری حربے استعمال کر کے عصمت فروشی کی گھناونے دھندے میں ملوث درندوں کو عدم ثبوتوںکی بناء پر عدالتوںسے باعزت بری کرواتی ہے۔ با اثر جابروں اور پولیس سمیت دیگر ریاستی اداروںکے دباو کی وجہ سے شہادت دینے والے گواہان کے انکاری ہونیکے باعث مختاراں مائی ،شمیم کیانی، سونیا نعمان و بہت سی حوا کی بیٹیاں انصاف حاصل نہ کر سکیں۔ سیکرٹری جنرل محمد مدثر نے کہاکہ عمران نامی درندے کوتخت دارتک پہنچانے اور زینب سیمت 9 بچیوں کو انصاف دلوانے کے لئے شہادت دینے والے گواہان قوم کے ہیرو اور اصل مبارکباد کے مستحق ہیں۔انہوں نے کہا کہ عصمت فروشی اور اقدام قتل
جیسی بڑھتی ہوئی معاشرتی لعنت سے چھٹکارا حاصل کرنے کے لئے مجرمان کے ساتھ ان کی معاونت کرنے والوںکو قرارواقعی سزا دلوا نا ضروری ہے۔ غلام مجتبی اور عمیر جاوید نے کہا کہ قوم کی بیٹیوں کے استحصال کا سلسلہ شرمناک حد تک بڑھتا جا رہا ہے قانون کی حکمرانی اور انصاف کی فراہمی کے بغیر ہم اپنی نئی نسل کوترقیافتہ معاشرہ فراہم نہیں کر سکتے۔انہوں نے کہا کہ چند امیر زادوں، سیاستدانوں،وڈیروں اور سرمایہ داروں کے تحفظ کیلئے قوانین بنانا حکمرانوں کیلئے شرمندگی کا باعث ہے جو کہ ملک و قوم کے حقوق تحفظ اور ریاست کے ساتھ غداری کے مترادف ہے۔ سونیا نعمان، نبیلہ بٹ، گوشی ، مدیحہ شاہ و دیگر نے کہا کہ زینب پوری قوم کی بیٹی ہے اسکے مسکراتے چہرے کی تصویر نے دنیا بھر میں لوگوں کو دکھی کر دیا،ننھی زینب ،کائنات،ایمان فاطمہ و دیگرمعصوم بچوں کے قاتل عمران کو پھانسی کی سزا سنانے کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حوا کی بیٹیوں کی عزتوں اور لاشوںپر قہقے لگانے اور تالیاں بجانے والے ہوش کے ناخن لیں۔ ان کا کہنا تھا کہ قوم کی بیٹیوں کے دیگر مجرمان کو بھی دہشتگردی ایکٹ کے مطابق سزائیں دی جائیں: انہوںنے چیف جسٹس آف پاکستان سے پرزور اپیل کی کہ وہ زینب انصاری کیس کی طرح خواتین وبچیوں کے ساتھ ہونے والی زیادتیوں کا نوٹس لیں اور زاتی دلچسپی لیتے ہوئے جلد و فوری انصاف کے حصول کے لئے ممکنہ اقدامات عمل میں لائیں پوری پاکستانی قوم سے حوا کی بیٹی کی تذلیل کرنے والے دجالوں کے خلاف آواز اٹھانے اور ان کو بے نقاب کر کے آنے والی نسلوں کو بچانے کی جدوجہد میں ساتھ دینے کی اپیل کی

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.