کشمیر کی آزادی کے لیے مسلم دُنیا کے حکمرانوں کو رویے بدلنا ہوں گے:صاحبزادہ اشرف عاصمی ایڈووکیٹ

189

لاہور(نیوزنامہ)جب تک کشمیر آزاذ نہیں ہوگا اُس وقت تک جنوبی ایشیاء میں امن کوئی ضمانت نہیں دی جاسکتی۔ پاکستانی حکومت فوری طور پر بھارت کا ہر سطع پر بائیکاٹ کرئے۔ مودی سرکار نے کشمیر یوں پر ظلم کی انتہا کردی ہے۔ اِن خیالات کا اظہار انسانی حقوق کے علمبردار ہیومن رائٹس کمیٹی لاہور ہائی کورٹ بار کے چیئرمین صاحبزادہ میاں محمد اشرف عاصمی ایڈووکیٹ نے کشمیر میں بھارتی ظلم وستم کے خلاف علامتی بھوک ہڑتال کے دوران لاہور ہائی کورٹ کے ڈیموکریٹک لان میں وکلاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اشرف عاصمی نے مزید کہا کہ بھارت کے ٹکرئے ٹکرئے ہونے کا وقت آپہنچا ہے۔ کشمیر کی آزادی کے لیے مسلم دُنیا کے حکمرانوں کو اپنے رویے بدلنا ہوں گے۔ایک طرف متحدہ عرب امارات بھارت میں تاریخ کی سب سے زیادہ سرمایہ کاری کر رہا ہے دوسری طرف سعودی عرب نے مودی کو اپنا سب سے بڑا سول ایوارڈ دیا ہے۔ تیسری طرف پاکستانی حکمران بھارت سے تجارت کے لیے بے چین ہیں۔ پا کستان کے عوام دُنیا بھر میں کشمیر کیآزادی کے لیے کشمیریوں کی ہر طرح کی اخلاق و سیاسی حمایت جاری رکھے ہوئے ہیں۔ دوسری طرف سعودی عرب، ایران، افغانستان اور یو اے ای کے حکمرانوں کا رویہ نوشتہ دیوار ہے۔ جس بھارتی فوج کے ہاتھوں کشمیری مسلمان قتل کیے جارہے ہیں اُس بھارتی فوج کی معیشت کے استحکام کے لیے عرب امارات اور دیگر مسلم ممالک بھارت کے ساتھ ہیں۔ اشرف عاصمی ایڈووکیٹ کا کہنا تھا کہ بنگلہ دیش کی حسینہ واجد نے لفظ پاکستان کو اپنے ملک میں نشان عبرت بنایا ہوا ہے اور وہ چُن چُن کر سانحہ مشرقی پاکستان کے وقت کے پاکستانی خیر خواہوں کو پھانسیاں دی رہی ہے۔ پاکستان سمیت تمام مسلم ممالک بھارت کا سماجی اور معاشی باہکاٹ کر یں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.