Urdu News and Media Website

بھارت کرونا سے بھی زیادہ خطرناک وائرس کی لپیٹ میں آگیا

بھارت کرونا سے بھی زیادہ خطرناک وائرس کی لپیٹ میں پوری طرح آگیا ہے۔

یہ لاعلاج اور خطرناک ترین وائرس کون سا ہے؟

بھارت کی معروف مصنفہ اور سماجی کارکن اروندھتی رائے نے بتادیا۔

ارون دھتی رائے کاکہناہے کہ انتہا پسندی بھارت کاکرونا وائرس ہے۔

بھارتی مصنفہ نے وزیراعظم نریندرمودی کو بدترین آمر اور ریاستی سرپرستی میں مسلمانوں پر حملوں کا بھی ذمہ دار قرار دےدیا۔

بھارتی دارالحکومت دہلی میں جنترمنترکے مقام پر ریلی سے خطاب کرتے ہوئے

ارون دھتی رائےنے کہا کہ انتہا پسندی وہ بیماری ہے جس میں بھارت مبتلا ہے۔

نئی دہلی میں ہندو مسلم فسادات : وزیراعظم نے عالمی برادری کو خبردار کر دیا

یہ جنگ آمریت اور مزاحمت کے درمیان ہے جس میں مسلمان سب سے پہلا نشانہ ہیں۔

معروف سماجی کارکن نے مزید کہا کہ انتخابات میں شرمناک شکست پر بی جے پی اور آر ایس ایس دہلی سے انتقامی کارروائی پر اترآئی ہے۔

آنے والے بہار الیکشن پر اثرانداز ہونے کی کوشش کی جارہی ہے۔

ارون دھتی رائے نے کہا کہ تمام حقائق ریکارڈ پرموجود ہیں لیکن توڑ مروڑ پر پیش کیا جارہا ہے۔

حکمران جماعت بی جے پی کے رہنماؤں کی اشتعال انگیز تقاریر،جے شری رام کے نعرے لگا کر حملہ کرنے والوں

خاموش تماشائی بنے یا جلاؤ گھیراؤ میں شامل اور نیم مردہ حالت میں مسلمان نوجوانوں پر ڈنڈے برسا کر

ترانہ گانے پر اصرار کرنے والے پولیس اہلکاروں کی ویڈیوز موجود ہیں۔

بھارت نے کشمیریوں پر ایک اور پہاڑ گِرا دیا، 37 نئے غاصبانہ قوانین نافذ

ارون دھتی رائے کا کہنا تھا کہ دہلی میں تشدد اور فسادات نہیں بلکہ مسلمانوں کے خلاف منظم بربریت ہے۔

بھارتی دارالحکومت کی سڑکوں پر خون کی ہولی کی ذمہ دار بی جے پی ہے۔

دوسری طرف بھارتی مصنف کینان ملک نے برطانوی اخبار دی گارڈین میں اپنے مضمون میں لکھا کہ

دہلی کی سڑکوں پر خون کی ہولی کی ذمہ دار ہندو قوم پرست بی جے پی کا پھیلایا ہوا نفرت کا زہر ہے۔

شہریت قانون کے نتیجے میں لاکھوں مسلمانوں کے بھارت کے روہنگیا بن جانے کا خدشہ لاحق ہے۔

نئی دہلی(ویب ڈیسک)

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.