بچوں نےماں کی لاش 12سال فریزرمیں کیوں رکھی؟

کراچی میں ایسا عجیب و غریب واقعہ سامنے آگیا کہ سننے والے حیرت زدہ ہوکررہ گئے۔

ماں سے محبت یا کچھ اوروجہ؟والدہ کے انتقال کرنے پر بیٹے اور بیٹی نے دفنانے کی بجائے لاش فریزر میں رکھ کر12سال چھپائے رکھی۔

دونوں بہن بھائیوں کے مرنے کےبعد خاتون کے بھائی نے لاش ٹھکانے لگانے کی کوشش کی تو پکڑا گیا

اور ساری کہانی منظر عام پر آگئی۔

گلشن اقبال بلاک 11میں کریسنٹ اپارٹمنٹس کے قریب کچرا کنڈی سے انسانی ڈھانچہ برآمدہوا۔

سی سی ٹی وی ویڈیو سامنے آنے کے بعد پولیس نے لاش پھینکنے والے ملزم محبوب کو گرفتارکرلیا۔

عالمی سوشل میڈیا کمپنیوں کے پاس صرف 3 ماہ

پولیس کے مطابق ملزم محبوب نے بتایا کہ اس کی بہن ذکیہ 12سال قبل انتقال کرگئی تھی۔

بیٹے اور بیٹی نے دفنانے کی بجائے ماں کی لاش فریزر میں رکھ کر محفوظ کرلی

،تاکہ جب دل چاہا والدہ کو دیکھ سکیں۔
پولیس کی تحقیقات میں یہ بات بھی سامنے آئی کہ ماں کے انتقال کے بعد بیٹا اوربیٹی کہیں اور منتقل ہوگئے تھے۔

اور وقتاً فوقتاً فلیٹ میں آکر ماں کی لاش کو دیکھا کرتے تھے۔

محبوب نے پولیس کو مزید بتایا کہ ان کا بھانجا اور بھانجی فلیٹ میں اکیلے رہتے تھے اور دونوں غیر شادی شادہ تھے۔

کچھ ماہ قبل ان کا بھی انتقال ہوگیا۔

پڑوسیوں نے شکایت کی کہ فلیٹ سے بو آرہی ہے جس کے بعد آکر دیکھا کہ لاش فریزر میں موجود تھی۔

لاش فریزر سے نکال کر کچرا کنڈی میں پھینک دی۔

اھلاً و سھلاً مرحبا۔۔۔جی آیاں نوں۔۔پخیر راغلے

کریسنٹ اپارٹمنٹس کی رہائشی یونین کے صدر دانش کریم نے بتایا کہ ذکیہ زیدی کو 2008 کے بعد سے نہیں دیکھا گیا

ذکیہ زیدی ٹیچر تھیں اور اس کے دو بچے تھے۔

دانش کے مطابق ذکیہ کے بیٹے قیصر ان کے ساتھ کرکیٹ کھیلا کرتے تھے۔

بعد میں جب ان سے والدہ کے بارے میں پوچھا جاتا تھا تو وہ بدتمیزی سے پیش آتے تھے

اس لیے ان سے کوئی سوال نہیں کرتا تھا۔

پڑوسیوں کے مطابق دونوں بہن بھائیوں کی ذہنی حالت مشکوک معلوم ہوتی تھی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ محبوب کو حراست میں لے کر تفتیش کی جا رہی ہے۔لاش کا ڈی این اے ٹیسٹ کرایا جائے گا

تاکہ معلوم ہوسکے کہ ذکیہ کی موت طبعی تھی یا قتل کیا گیا۔

کراچی(ویب ڈیسک)

تبصرے بند ہیں.