حکومت عقیدہ ختم نبوت کی شق میں تبدیلی کر نے والے عناصرکوعبرت کانشان بنائے:عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت

لاہور(نیوز نامہ)حکومت قادیانیوں سے متعلق تمام شقوں کو سابقہ حالت میں بحال کرنے میں تاخیر نہ کرے۔ 7 بی اور سی سے متعلق ابہام دور کیا جائے ابھی تک صرف اورصرف حکومت نے وعدہ کیا ہے لیکن اس پر حکومت نے ابھی تک عمل نہیں کیا اس سے مسلمانوں میں اضطراب پایا جاتا ہے حکومت فوری طورپر یہ بل اسمبلی سے منظورکروائے تاکہ امت مسلمہ کی بے چینی ختم ہو۔حکومت نے ماضی سے کوئی سبق نہیں سیکھا ایک سکہ بند قادیانی کو ڈی آئی جی انویسٹی گیشن بنایا جانااورپنجاب ایجوکیشن بورڈ کی طرف سے قادیانیوں کو سکول دینے کاعمل حکومتی قادیانیت نوازی کا تسلسل ہے ۔ملک عزیزمیں منکرین ختم نبوت کو کوئی مسلمان برداشت نہیں کرسکتا۔ اتنے دن گزر جانے کے باوجود ختم نبوت حلف نامہ میں تبدیلی کی سازش کی تحقیقاتی رپورٹ سامنے نہ آنا باعث تشویش ہے۔ ختم نبوت کے معاملے کو سرد خانے میں ڈالنے کی کوشش کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔ختم نبوت اور ناموس رسالت کے قوانین کو دنیا کی کوئی طاقت تبدیل اور ختم نہیں کر سکتی ان خیالات کا اظہار عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے مرکزی ناظم نشرواشاعت مولانا عزیزالرحمن ثانی،پیرمیاں رضوان نفیس،قاری جمیل الرحمن اختر،مولانا عبداشکورحقانی،مولاناعلیم الدین شاکر، مولانا عبدالنعیم،مولانا مسعوداحمد،قاری محمداقبال نے ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔علماء نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ حلف نامہ حذف کرنے والے سازشی عناصرجو کہ آئین کی اسلامی دفعات اور پاکستان کے خلاف سازشوں میں مصروف ہیں ان کوبے نقاب کرنا وقت کی اشد ضرورت ہے ،حکومت ختم نبوت کے عقیدے پر نقب لگانے والوں کے نام منظر عام پر لائے ،راجہ ظفر الحق کی سر براہی میں کمیٹی قوم کو اصل صورتحال سے قوم کو آگاہ کرے اور سازشیوں کے چہرے عوام کے سامنے لائے۔علماء نے کہاکہ حکومت عقیدہ ختم نبوت کی شق میں تبدیلی کی ناپا ک جسارت کر نے والے سازشی عناصر کو بے نقاب کر کے عبرت کا نشان بنائے تاکہ آئندہ کسی کو عقیدہ ختم اور تحفظ ناموس رسالت قوانین کے ایکٹ پر شب خون مار نے کی جسارت نہ ہو۔ عقیدہ ختم نبوت کے تحفظ کے لیے کام کر نے والے ہی کل شفاعت رسولؐ کے حقدار بنیںگے۔علماء نے کہاکہ عقیدہ ختم نبوت اور آئین کی اسلامی دفعات کا تحفظ ہماری جدوجہد کا لازمی اور اہم حصہ ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.