مظلوم کشمیریوں اور پاک فوج سے اظہار یکجہتی کیلئے اے ایس پی رینالہ سرکل کے زیراہتمام یکجہتی کشمیر ریلی

30

رینالہ خورد(راؤ عتیق گوہر)مقبوضہ کشمیر کے مظلوم کشمیریوں اور پاک فوج سے اظہار یکجہتی کیلئے اے ایس پی رینالہ سرکل حنانیک بخت، صدر رینالہ پریس کلب رائو عتیق گوہر، معروف مذہبی وسماجی رہنما حافظ اسامہ فاروق کی قیادت میں مدرسہ جامعہ عائشہ صدیقہ برائے خواتین کے زیراہتمام کشمیر بنے گاپاکستان کے عنوان سے یکجہتی کشمیر ریلی نکالی گئی ریلی میں شہر سے بڑی تعداد میں خواتین مختلف سکولوں کے بچوں اور سماجی شخصیات نے شرکت کی ریلی کے شرکاء نے پلے کارڈزاور بینرزاٹھارکھے تھے جن پر کشمیریوں کے حق اور بھارت مخالف نعرے درج تھے فضا کشمیر بنے گاپاکستان کے نعروں سے گونج رہی تھی ریلی رائے ٹاون سے شروع ہوکر پل انوار شہیدکالونی پہنچی جہاں پر اے ایس پی حنانیک بخت نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ بھارتی جارحیت خطے کیلئے خطرہ پیداکررہی ہے مودی کی غنڈاگردی سے ایٹمی جنگ کے خطرات منڈلارہے ہیں جس کا خمیازہ عالمی برادری کے گونگے بہرے اور اندھے حکمرانوں کو بھگتنا پڑے گا موجودہ حالات میں پوری پاکستانی قوم کا پاک فوج ودیگر سیکورٹی اداروں اور حکومت کے موقف کی تائید میں یک جان ہوجانا اس بات کاواضح ثبوت ہے کہ بھارت کاغرور وتکبر جلد خاک میں ملنے والا ہے اللہ کے فضل سے وہ دن دور نہیں جب پاکستانی فوج دیگر سیکورٹی اداروں اور قوم کے سچے ایمانی جذبوں کی مددسے مقبوضہ کشمیر کے چپے چپے کو آزاد کرواکر دہلی میں بھی پاکستانی پرچم لہرائے گی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے رائو عتیق گوہر نے کہاکہ مقبوضہ کشمیر پاکستان کے وجود کاحصہ ہے پوری امت مسلمہ کشمیریوں کے زخموں کو اپنے جسموں پر محسوس کررہی ہے کشمیریوں پر بھارتی مظالم پر اب خاموشی نہیں جنگ واجب ہوچکی ہے اور قوم سپہ سالار آرمی چیف قمرجاویدباجوہ کی قیادت میں باڈروں پر جانے کو تیار ہیں علاوہ ازیں جامعہ مسجد ابی ہریرہ کے زیراہتمام بعدنمازجمعہ مولانا قاری حافظ زبیر فاروق اور حاجی سعیدالرحمٰن کی زیرقیادت یکجہتی کشمیر ریلی نکالی گئی ریلی غلہ منڈی صدر بازار سے ہوتی ہوئی پھاٹک بازار میں احتتام پذیر ہوئی ریلی سے مولانا قاری حافظ زبیر فاروق اور دیگر مقررین نے خطاب کیااور مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ظلم وبربریت کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیاکہ مقبوضہ کشمیر کی موجودہ صورتحال میں بھارت کو نیست ونابود کرنے کیلئے ٹھوس حکمت عملی بنائی جائے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.