حکومت کی قربانی کی کھالیں جمع کرنے کی حکمت عملی سوشل ازم کے فروغ کی گہری سازش ہے: مولانا ظفراللہ

8

رینالہ خورد(راؤ عتیق گوہر)معروف مذہبی رہنما ممبر امن کمیٹی ساہیوال ڈویژن مولانا ظفراللہ قمر لکھوی نے اپنے جاری بیان میں کہاہے کہ حکومت نے عیدقربان کے موقع پر قربانی کی کھالیں جمع کرنے کے حوالے سے جو حکمت عملی دینی مدارس اور علماء کیلئے اپنائی وہ ملک میں سوشل ازم کو فروغ دینے کی گہری سازش ہے اور دینی مدارس کسی بھی حکومتی امداد کے بغیر لوگوں کے عطیات سے چلتے ہیں اور پوری طرح سے دین کی خدمت کرنے میں مصروف عمل ہیں

لیکن موجودہ حکومت نے انکی امداد روکنے کیلئے اہنی بھونڈی حرکات کا آغاز کیاہے جسکی علماء کرام شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں انکاکہنا تھاکہ شوکت خانم ہسپتال کیلئے کسی قانونی اجازت نامے کی ضرورت نہیں پڑتی اور دینی مدارس کھالیں اکٹھی کریں تو انہیں کٹھن ترین مراحل سے گزاراجاتاہے حکومتی سطح پر یوم آزادی کے پروگراموں میں علماء کرام اور امن کمیٹی کے اراکین کو دعوت نہ دے کر بھی حکومت نے علماء سے تعصب پرستی اختیار کی انہوں نے کہاکہ حکومت کی علماء کرام اور دینی مدارس کے خلاف موجودہ پالیسیاں آنیوالے مذہبی تہواروں پر اثر اندازہوسکتی ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.