بالاکوٹ حملہ:بھارتی وزیراعظم نریندرمودی حقیقت میں شیخ چلی نکلے

121

نئی دہلی(ویب ڈیسک)بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے پاکستان کےعلاقے بالاکوٹ میں انڈین فضائيہ کی سٹرائیک سے پہلے کی روداد کیا سنائی بھارتی اپوزیشن جماعتیں اور سوشل میڈیا ان کے پیچھے پڑ گیا۔نریندرمودی نے ایک انٹرویو میں کہا کہ بادلوں اور بارش کی وجہ سے انڈیا کے فائٹر طیارے پاکستان کے ریڈار سے بچ جائیں گے اور اسی لیے انھوں نے ايئر سٹرائیک کی اجازت دے دی۔بھارتی پردھان منتری نریندرمودی کاانٹرویو نشر ہوتے ہی سوشل میڈیا پر ’انٹائر کلاؤڈ کور‘ یعنی پوری طرح بادل کے پردے میں ٹرینڈ کرنے لگا اور مرزا غالب سے مشابہ مرزا کلاؤڈی نام کا ایک شاعر بھی پیدا ہوگیا جس کا ایک شعر واٹس ایپ گروپ میں تیزی سے پھیل رہا ہے۔نریندر مودی کا یہ انٹرویو انڈیا کے ٹیکنالوجی کے قومی دن کے موقع پر ’نیوز نیشن‘ نامی چینل پر پیش کیا گیا۔ اس انٹرویو کے بعض حصوں کو وزیر اعظم مودی اور بی جے پی کے ہمنوا بہت سارے اکاؤنٹس نے بھی شیئر کیا ہے۔
بالاکوٹ ایئر سٹرائیک کے بارے میں بات کرتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا: میں نے نو بجے (ایئر سٹرائیک کی تیاری کے بارے میں) ریویو کیا۔۔۔ پھر 12 بجے ریویو کیا۔ ہمارے سامنے مسئلہ تھا کہ اس وقت اچانک موسم خراب ہو گیا۔۔۔ بہت بارش ہوئی، میں حیران ہوا ابھی تک ملک کے اتنے بڑے پنڈت لوگ مجھے گالیاں دیتے ہیں ان کا دماغ یہاں نہیں چلتا۔ 12 بجے، یہ بھی میں پہلی بار بول رہا ہوں، ایک پل ہمارے دل میں آیا اس موسم میں ہم کیا کریں۔ بادل ہے جا پائيں گے؟ نہیں جا پائيں گے اس وقت ایکسپرٹ کی رائے تھی کہ تاریخ بدل دیں۔نریندرمودی نے مزید کہا: ’اس وقت میرے ذہن میں دو خیال آئے۔ ایک سیکریسی، ابھی تک سب سیکرٹ (راز) تھا۔ رازداری میں اگر ڈھیل ہوئی تو ہم کچھ کر ہی نہیں سکتے۔ دوسری بات۔۔۔ میں ایسا شخص نہیں ہوں جو ان سب سائنس کو جانتا ہے۔۔۔ لیکن میں نے کہا اتنا کلاؤڈ (بادل) ہے، بارش ہو رہی ہے تو ایک فائدہ ہے۔ کیا ہم ریڈار سے بچ سکتے ہیں۔ میں نے کہا کہ یہ میری سوچ ہے کہ بادلوں سے فائدہ بھی ہوسکتا ہے۔ سب الجھن میں تھے کہ کیا کریں۔ پھر بالآخر میں نے کہا اوکے، جایے۔ پھر چل پڑے۔‘ادھر بھارتی وزیراعظم نریندرمودی کا انٹرویو سامنے آتے ہی سوشل میڈیا پر مذاق کا نشانہ بنایا جارہا ہے ،دوسری طرف بھارت کی اپوزیشن جماعتوں نے بھی نریندرمودی کو نشانے پر لے رکھا ہے،کڑی تنقیدکا نشانہ بناتے ہوئےکوئی مودی کا مذاق اڑا رہا ہے تو کوئی پاگل کہہ رہا ہے،کوئی ملک دشمن قرار دے رہا ہے ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.