سعودی عرب میں ایک ہی روز 37 دہشت گردوں کے سر قلم

73

ریاض (ویب ڈیسک)سعودی عرب کی حکومت نے دہشت گردی کے الزام میں سزائے موت پانے والے 37 دہشت گردون کے سر قلم کردیے۔تفصیلات کے مطابق سعودی وزارتِ داخلہ کے بیان میں کہا گیا ہے کہ جن افراد کی موت کی سزاؤں پر عمل درآمد کیا گیا وہ شدت پسند نظریات رکھتے تھے اور انہوں نے مملکت میں فرقہ واریت اور بدامنی کو ہوا دینے کے لیے دہشت گرد گروہ قائم کر رکھے تھے۔وزارت داخلہ کا کہنا ہے کہ ریاض کی خصوصی عدالت میں شفاف طریقے سے مقدمات چلائے گئے جو سعودی عرب میں دہشت گردی سے متعلق مقدمات کی سماعت کے لیے قائم اعلیٰ ترین عدالت ہے۔ان افراد پر آتش گیر مواد سے سکیورٹی اہلکاروں پر حملہ کرنے، انہیں قتل کرنے اور ملک کے مفادات کے خلاف دشمن تنظیموں سے تعاون کرنے کے الزامات ثابت ہوئے تھے۔
واضح رہے کہ سعودی عرب میں گزشتہ چار سال کے دوران ایک ہی روز اتنی بڑی تعداد میں قیدیوں کے سر قلم کیے جانے کا یہ پہلا واقعہ ہے۔اس سے قبل دو جنوری 2016ء کو سعودی حکام نے ایک ساتھ 47 افراد کے سر قلم کیے تھے جنہیں دہشت گردی سے متعلق مختلف مقدمات میں موت کی سزائیں سنائی گئی تھیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.