وکلاء ہیں تو عدالتیں ہیں:وکلا ء کی میڈیا سے گفتگو

92

لاہور(نیوز نامہ)پورے پاکستان کے وکلاء ایک ہیں اور وکلاء کے خلاف کوئی بھی سازش کامیاب نہ ہو گی عدالتوں کی عزت صرف اور صرف وکلاء کی وجہ سے ہیں رانا انتظار حسین ممبر پنجاب بار کونسل و محمد مدثرچوہدری سابق کوآڑڈنیٹر پاکستان بار کونسل بینچ کو ہمشہ بار کو ساتھ لے کرچلنا چاہیے اس سے ہی انصاف ممکن ہے وکلاء ہیں تو عدالت ہے اور جج ہے اگر وکلاء ہی نہں تو عدالت کیسی اور جج کیساَ ؟ ۔وکلاء ہیں تو عدالتیں ہیں اور اس کی وجہ سے ہی ججز کی عزت ہے جس کی مثال 2007 میں دیکھنے میں آئی کی کیس طرح ایک امر نے نظام کو مفلوج کر دیا تب وکلاہءنے ہی عدالتوں کو نہ صرف بازیاب کر وایا بلکہ عدلتوں کی عزت بھی بحال کروائی ۔بار اور بینچ ایک گاڑی کے پہیوں کی طرح ہیں ان میں سے اگر ایک بھی خراب ہو جائے تو گاری بیکار ہو جاتی ہے پورے پاکستان کے وکلاء کو نئی جوڈیشل پولیسی پر تحفظات ہیں جن کو ختم کیاجانا بہت ضروری ہے بصورت دیگر عدالتوں کا بائیکاٹ ہو گا اور پاکستان بار کونسل کے فیصلے کے مطابق ہر جمعرات کو پورے پاکستان کی عدالتوں میں ہڑتال کی جاے گی۔ بغیر وکلاہ کے عدالتوں کو نہیں چلایا جا سکتا ممکن ہی نہ ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.