لاہور:زہریلہ دوھواں پیدا کرنے والی فیکٹریوں اورورکشاپس کے خلاف پیٹسن دائر

100

لاہور(نیوز نامہ) سموگ اور زہریلہ دوھواں پیدا کرنے والی 332فیکٹریوں اورورکشاپس کے خلاف پیٹسن دائر۔تفصیلات کے مطابق درواغہ والا شادی پورہ مومن پورہ اور اس کے ملحقہ علاقوں میں موجود ٹائر جلاکر زہریلہ دھواں اور سموگ پیدا کرنے والی 332فیکٹریاں اور ورکشاپس کے خلاف پریشان اہل علاقہ نے مقامی شہری میاں خلیل حنیف نے ڈائریکٹر جنرل پنجاب ماحولیاتی تحفظ اٹھارٹی کے پاس اپنے وکلاء سابق کوآڈڑنیٹر پاکستان بار کونسل محمد مدثر چوہدری، رانا نعمان، رحمان ناصر، عمیر جاوید، جی ایم چوہدری، اشتیاق رسول کے زریعے پیٹشن دائر کر دی اور اس کے خلاف سپریم کورٹ اف پاکستان جانے کا بھی فیصلہپیٹسن میں یہ بیان کیا گیا ہے کہ یہاں موجود فیکٹریاں اپنا ایندھن پیدا کرنے کے لے ٹائر جلاتی ہیں جس سے خطر ناک دھواں پیدا ہو تا ہے اور پورے علاقہ میں پھیل جاتا ہے اس سے وہاں کے مقامی میں تیزی سے دمہ جیسی بیمارں پھیل رہی ہیں اور عرصہ دارز سے وہاں کے رہائشی اس خطر ناک ماحولیاتی آلودگی کا سامنا کر رہے ہیں اس کی وجہ سے کہی معصوم جانوں بھی اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھی ہے اور اس کی بابت ہر فورم پر آواز اٹھائی گی مگر کوئی شنوائی نہ ہو رہی ہے اگر ان کو سیل بھی کر دیا جاتا ہے تو سیاسی اثررسوخ استعمال کر کے فوری کھول دیا جاتا ہے جس پر پورا علاقہ سراپااحتجاج ہے اور اس میں استدعا کی گی ہے کہ ان تمام فیکٹریاں کو شہری علاقہ سے دور شفٹ کیا جائے ورانہ ہم سپریم کورٹ اف پاکستان تک جایءں گے۔ 

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.