بلوچستان:سکول میں تعلیم کی بجائے پیٹرول دستیاب

106

پشین(ویب ڈیسک)صوبہ بلوچستان کے ضلع پشین میںایک ایسا سکول ہے جہاں سے تعلیم تو نہیں ملتی،مگر پیٹرول ضرور ملتا ہے۔تفصیلات کے مطابق پشین کےایک مڈل اسکول کو عملے نے منی پیڑول پمپ میںبدل دیا،سکول میں بنائے گئے اس منی پیٹرول پمپ سے بڑے پیمانے پر پیٹرول اور ڈیزل کی فروخت کا انکشاف ہوا ہے۔اس بات کا انکشاف جمعیت علمائے اسلام (جے یو آئی) سے تعلق رکھنے والے رکن صوبائی اسمبلی اور سابق گورنر بلوچستان سید فضل آغا کے اسکول کے اچانک دورے کے موقع پر ہوا۔جب رکن اسمبلی پشین کے گورنمنٹ مڈل اسکول منظری پہنچنے تو وہ یہ دیکھ کر حیران رہ گئے کہ اسکول میں بچوں کو تعلیم دینے کے بجائے عملے نے اسکول کو منی پیڑول پمپ میں تبدیل کر رکھا ہے اور وہاں سے بڑے پیمانے پر پیٹرول اور ڈیزل کی فروخت کا سلسلہ جاری ہے۔رکن بلوچستان اسمبلی نے اس صورتحال پر سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے اپنے ساتھ دورے پر آنے والے ڈسٹرکٹ ایجوکیشن افیسر پشین کلیم اللہ کو عملے کے خلاف کارروائی کا حکم دے دیا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.