عوامی رکشہ یونین ، عوامی پاسبان کا مہنگائی کے خلاف احتجاجی مظاہرہ

122

لاہور( نیوز نامہ)عوامی رکشہ یونین اور عوامی پاسبان کے زیر اہتمام مہنگائی کے خلاف احتجاجی مظاہرہ سے ملی مسلم لیگ لیگ کے سیکرٹری جنرل محمد یعقوب شیخ،ڈپٹی سیکرٹری جنرل حافظ خالد ولید نے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت کا سودن گزر چکا،حکومت نے سو دنوں میں مہنگائی کو ترقی دی جس سے غریبوں کے گھر کے چولہے بجھ گئے۔رکشہ ڈرائیوروں کے مطالبات پورے کئے جائیں۔وزیر اعظم عمران خان نے ریاست مدینہ کی طرز پر پاکستان کو چلانے کا اعلان کیا اس کا خیر مقدم کرتے ہیں لیکن غریب عوام کو ریلیف دینے کے لئے مہنگائی کا خاتمہ کیا جائے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے عوامی رکشہ یونین کے چیئرمین مجید غوری کی قیادت میں مہنگائی کے خلاف ہونیوالے احتجاج کے شرکا ء سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔احتجاجی مظاہرہ میں سینکڑوں کارکنان کے علاوہ عوامی پاسبان اور ملی مسلم لیگ کے رہنمائوں نے رکشہ ڈرائیوروں سے اظہار یکجہتی کیلئے خصوصی شرکت کی۔کارکنان وزیر خزانہ سے استعفی ٰ اور مہنگائی میں کمی کا مطالبہ کرتے ہوئے نعرے بازی کرتے رہے۔ احتجاجی مظاہرے کی وجہ سے ٹریفک کا نظام درہم برہم ہو گیا اور گاڑیوںکی لمبی لائنیں لگ گئیں۔اس موقع پر مہنگائی کا علامتی جنازہ بھی اٹھایا گیا۔ ملی مسلم لیگ لیگ کے سیکرٹری جنرل محمد یعقوب شیخ،ڈپٹی سیکرٹری جنرل حافظ خالد ولید نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک جانتا ہے کہ رکشہ ڈرائیور عوام کوایک جگہ سے دوسری جگہ لے کر جاتے ہیں اور عوام کے زمینی فاصلے کم کرتے ہیں۔ایسے ڈرائیو بھی ہیں جن کو بیس پچیس برس ہو گئے جن کے پاس اپنا گھر نہیں۔آج ان کے گھر کا چولہا بھی بند ہے کیونکہ ہر حکومت بے مہنگائی کو ترقی دی ہے۔ پٹرول سی این جی مہنگی ہے۔ بل آتے ہیں بجلی نہیں آتی۔ چوبیس گھنٹے میں چار مرتبہ مہنگائی ہوتی ہے۔ حکومت سے مطالبہ رکشہ ڈرائیور کے لیے پٹرول کے ریٹ الگ ہونے چاہیے۔حکومت سبسڈی دے۔ اگر پٹرول سستا نہیں کیا جا سکتا تو عوام پر رحم کرتے ہوئے پٹرول کی قیمت ڈاون کی جائے تا کہ مزدور کو چولہا آسانی سے چل سکے۔ اتنی تیز ایئر لائن نہیں چلتی جتنا تیز ڈالر چل رہا ہے اس کی پرواز راکٹ کہ طرح ہو چکی ہے۔ڈالر مہنگا ہونے کی وجہ سے عوام کا حلقہ حیات تنگ ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت کا ایک سو دن گزر چکا لیکن پاکستان کے عوام جاننا چاہتے ہیں کہ مزدوروں کو کیا ملا ان کے چولہے بجھ گئے ہیں۔اگر یہ نیا پاکستان ہے تو یہ تمہیں مبارک ہو ہمیں پرانا پاکستان چاہیے۔ عوامی رکشہ یونین کے چیئرمین مجید غوری نے کہا کہ نیا پاکستان بنے تین ماہ سے زائد کا عرصہ ہو گیا ہے لیکن مہنگائی میں کمی ہونے کی بجائے مسلسل اضافہ جاری ہے۔جبکہ عام عوام کی آمدنی میں کمی ہوتی جارہی ہے۔کاروبار نہ ہونے کے برابرہے۔ ملازمت پیشہ افراداور مزدوروں کے گھروں میں فاقے ہیں۔ موجودہ حکمران کہتے ہیں کہ یہ سابقہ حکومتوںکا کیا دھرا ہے۔ ہم بھی یہ مانتے ہیں اسی لئے تو عوام نے تمام پرانی سیاسی جماعتوں کو مسترد کر کے آپ کو ووٹ دیاتھاکہ آپ ملک سنبھالو ملک کا پیسہ لوٹنے والوں سے پیسہ واپس نکلوائواور غریب عوام کو ریلیف دو۔ لیکن کا م ہی سارا الٹا ہو گیا ہے۔ن لیگ اور پیپلز پارٹی حکمرانوں کو للکار رہی ہیںکہ لوٹا ہوا پیسہ نکلوا کر دکھائو۔سابق حکومتوں میں لوٹ مار کرنے والے اب موجودہ حکومت کے وزرامیں شامل ہیں۔ مجید غوری نے اعلان کیا ہے کہ آج سے مہنگائی کے خلاف احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ شروع کر دیاہے جو مہنگائی میں کمی تک جاری رہے گا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.